فجیرہ: گُستاخ بیٹے نے والدہ کو گھر کی بجائے نائٹ کلب میں رہنے کا مشورہ دے دِیا

والدہ نے بیٹے کے خلاف بدکلامی کرنے پر اُسے جیل بھجوانے کے لیے مقدمہ درج کروا دیا

Muhammad Irfan محمد عرفان منگل اکتوبر 12:08

فجیرہ: گُستاخ بیٹے نے والدہ کو گھر کی بجائے نائٹ کلب میں رہنے کا مشورہ ..
فجیرہ (اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔8 اکتوبر2019ء) متحدہ عرب امارات کی ریاست فجیرہ میں مقیم ایک عرب خاتون نے اپنے ہی بیٹے کے خلاف مقدمہ درج کروا دیا۔ خاتون نے عدالت میں مقدمے کی سماعت کے دوران جج سے یہ استدعا بھی کی ہے کہ اس کے نافرمان بیٹے کو جیل بھیجا جائے اور اس پر پچاس ہزار درہم کا بھاری جرمانہ بھی عائد کیا جائے۔ خاتون نے عدالت کو بتایا کہ اُس کے اور بیٹے کے درمیان کسی بات پر جھگڑا ہوا، تو گُستاخ بیٹے نے اُسے گالیاں دیں اور اس پر چِلاتے ہوئے کہا ”ماں، تمہارے لیے گھر پر رہنے کی بجائے یہی اچھا ہو گا کہ کسی نائٹ کلب میں ٹھکانہ بنا لو۔

“ خاتون کے مطابق میں اپنے بیٹے کی جانب سے یہ انتہائی بے ہودہ الفاظ سُن کر پریشان ہو گئی اور مجھے اتنا زیادہ صدمہ ہوا کہ جسے لفظوں میں بیان نہیں کر سکتی۔

(جاری ہے)

اسی وجہ سے میں چاہتی ہوں کہ میرے بدتمیز بیٹے کو جیل بھیجا جائے اور اس پر بھاری جرمانہ بھی عائد کیا جائے۔ تاہم عدالت میں پیشی کے دوران بیٹے کا کہنا تھا کہ اس نے اپنی والدہ کو ایسے خراب کلمات بالکل نہیں بولے۔

دراصل اُس کی والدہ اور والد کے تعلقات کافی عرصے سے خراب چلے آ رہے ہیں۔ دونوں کے درمیان علیحدگی کے لیے فیملی کورٹ میں کیس بھی چل رہا ہے۔ وقوعہ کے روز وہ والدین میں مصالحت کی خاطر اُن کے پاس موجود تھا۔ اس کے والدین آپس میں کسی بات پر بحث کر رہے تھے۔ میں نے اس معاملے میں والد صاحب کا ساتھ دِیا کیونکہ میرا خیال تھا کہ وہ ٹھیک بات کر رہے تھے۔

بس اسی بات پر والدہ طیش میں آ گئیں۔ میں نے اُنہیں بالکل بھی گالیاں نہیں دیں اور نہ ہی کوئی غلط لفظ بولا ہے۔ انہوں نے میرے خلاف کیس بھی اسی غصے میں دائر کیا ہے کہ میں اپنے والد کی بجائے اُن کا ساتھ کیوں نہیں دیتا۔ بیٹے کی جانب سے عدالت میں اس موقع پر دو گواہ بھی پیش کیے گئے، جنہوں نے اس کے موقف کی تائید کرتے ہوئے کہا کہ اس نے قطعی طور پر اپنی والدہ کی توہین نہیں کی۔ اس مقدمے کا فیصلہ اگلی سماعت پر سُنایا جائے گا۔

فجیرہ میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments