Ghalaf E Kabba Ki Tareekh

غلافِ کعبہ کی تاریخ

رسول کریم نے پہلی بار فتح مکہ کی خوشی میں یمن کا سیاہ غلاف چڑھانے کا حکم دیا جب حجاج کرام منیٰ کی طرف روانہ ہوتے ہیں تو نو ذی الحجہ کو نیا غلاف چڑھایا جاتا ہے، پردوں کو رسوں سے باندھ کر اوپر اُٹھا دیتے ہیں اور نیچے سے بیت اللہ کے بڑے بڑے سیاہ پتھر نظر آتے ہیں۔ غلاف کی سلائی اس طرح کی جاتی ہے کہ باب کعبہ حجرِ اسود اور رُکن یمانی کی جگہ کھلی رہتی ہے

Ghalaf e Kabba Ki Tareekh
Ghalaf e Kabba Ki Tareekh

Your Thoughts and Comments