Aik Shakhs K Jawab Par

ایک شخص کے جواب پر

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں کہ ایک آدمی رسول اللہ ﷺ کی خدمت میں حاضر ہوا اور کہنے لگا: ”میں ہلاک ہوگیا۔میں نے رمضان کے روزے کی حالت میں اپنی بیوی سے صحبت کرلی۔“

Aik Shakhs K Jawab Par
حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں کہ ایک آدمی رسول اللہ ﷺ کی خدمت میں حاضر ہوا اور کہنے لگا:
”میں ہلاک ہوگیا۔میں نے رمضان کے روزے کی حالت میں اپنی بیوی سے صحبت کرلی۔“
رسولﷺ نے فرمایا:
”ایک غلام آزاد کر۔“
وہ شخص بولا میرے پاس کوئی غلام نہیں۔
آپﷺ نے فرمایا:
”دو ماہ لگاتار روزے رکھ“
اس نے عرض کیا کہ مجھ میں اس کی طاقت نہیں۔


آپﷺ نے فرمایا:
”ساٹھ( 60 )مسکینوں کو کھانا کھلا“
اس نے کہا کہ میں یہ بھی نہیں کر سکتا۔
اتنے میں حضورﷺ کے پاس کھجوروں کا ایک ٹوکرا لایا گیا۔آپﷺ نے پوچھا:
سائل کہاں ہے؟
وہ حاضر ہوا تو آپﷺ نے اس سے فرمایا:
”جاؤ!کجھوروں کا یہ ٹوکرا غریبوں میں تقسیم کرکے آؤ۔“
اس شخص نے کہا:
”کیا میں اپنے سے زیادہ غریبوں میں تقسیم کروں۔اللہ کی قسم ! اس مدینے کی دونوں پتھریلی سرزمینوں کے درمیان کوئی مجھ سے زیادہ غریب اور محتاج نہیں۔“
یہ سن کر نبیﷺ اتنے ہنسے کہ آپ ﷺ کی داڑھیں نظر آنے لگیں۔ اور فرمایا:
”پھر اسے تم اور تمہارے گھر والے کھائیں۔“

Your Thoughts and Comments