Hazrat Khalid Bin Waleed RA K Islam Lanay Par

حضرت خالد بن ولید رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے اسلام لانے پر

حضرت خالد بن ولید ررضی اللہ عنہ بیا ن کرتے ہیں کہ جب نبیﷺ عمرہ کرکے واپس مدینے تشریف لے گئے تو میرے بھائی کا خط آیا جس سے میں اسلام کی طرف راغب ہوا۔

Hazrat Khalid Bin Waleed RA K Islam Lanay Par
اس سے پہلے مجھے ایک خواب نظر آیا تھا کہ میں ایک تنگ ویرانے سے نکل کر سرسبز اور کشادہ شہروں کی طرف جاتا ہوں۔
میں نے اسلام قبول کرنے کے لیے مدینے جانے کی تیاری کی ۔راستے میں اتفاق سے مجھے عثمان بن طلحہ اور عمرو بن العاص بھی مل گئے اور ہم تینوں مدینے میں داخل ہوئے۔اپنی سواریوں کو ایک جگہ بٹھایا۔
کسی نے ہمارے آنے کی اطلاع نبی ﷺ کو کردی۔
جب آپ ﷺ کو ہماری آمد کی خبر ملی تو فرمایا:
ِ ََِِِ” مکے نے اپنے جگر گوشوں کو ہماری طرف پھینک دیا ہے ۔


حضرت خالد بیان کرتے ہیں کہ راستے میں میرا بھائی بھی ہمارے ساتھ مل گیا اور ہم جلدی سے نبیﷺ کی خدمت میں حاضر ہوئے۔ آپ مجھے دیکھ کر مسکرائے۔ میں نے آپﷺ کو یوں سلام کیا:
اَسَلامُ عَلَیکَ یَا رَسُولَ اللہ !
آپﷺ نے نہایت خندہ پیشانی سے میرے سلام کا جواب دیا۔


میں نے عرض کیا:
(( اَشھَدُاَن لاَ اِلہ اِلاَاللہ ُ وَاَشھَدُاَنَ امُحَمَدُ رَسُولُاللہ ِ))
نبیﷺ نے فرمایا:
”قریب ہوجاؤ“
پھر فرمایا:
تمام تعریفیں اس ذات پاک کے لیے ہیں جس نے تمہیں اسلام کی توفیق دی۔ میں جانتا تھا کہ تم ایک عقل مند آدمی ہو اور مجھے اُمید تھی کہ تمہاری عقل تمہیں خیر اور بھلائی کی راہ دکھائے گی۔

Your Thoughts and Comments