Shab E Braat Main Piaray Nabi SAW Ka Tareeqa Kaar

شب برأت میں پیارے نبی ﷺ کا طریقہ کار

حضرت عائشہ نے فرمایا شعبان کی درمیانی رات میں نے دیکھا آپ سجدہ میں تھے اور یہ دعا پڑھ رہے تھے اے اللہ میرا جسم اور دل تجھے سجدہ کرتا ہے میرا دل تجھ پر ایمان لایا اور۔۔۔

Shab e Braat Main Piaray Nabi SAW Ka Tareeqa Kaar
محمد ادریس عزیز ملک:
ابو نصر رحمتہ اللہ علیہ اپنے باپ سے وہ یحییٰ بن سعید رحمتہ اللہ علیہ سے وہ عروہ سے اوروہ حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ تعالیٰ عنہا سے روایت کرتے ہیں حضرت عائشہ نے فرمایا شعبان کی درمیانی رات میں نے دیکھا آپ سجدہ میں تھے اور یہ دعا پڑھ رہے تھے اے اللہ میرا جسم اور دل تجھے سجدہ کرتا ہے میرا دل تجھ پر ایمان لایا اور میں تیری نعمتوں کا شکر ادا کرتا ہوں اپنے گناہوں کا اعتراف کرتا ہوں میں اپنی جان پر ظلم کیا تو مجھے بخش دے تیرے سوا کوئی گناہوں کابخشنے والا نہیں ۔
میں تیرے عذاب سے بچنے کے لیے تیری پناہ میں آتا ہوں تیرے غضب سے بچنے کے لیے تیری رضا مندی چاہتا ہوں تیرے عذاب سے امن میں رہنے کے لیے تجھی سے درخواست کرتا ہوں تیری حمدو ثناء کوئی بیان نہیں کر سکتا تو نے آپ اپنی ثناء کی ہے اور تو ہی آپ اپنی ثناء کر سکتا ہے اور کوئی نہیں کرسکتا۔

حضرت عائشہ رضی اللہ تعالیٰ عنہا کا بیان ہے کہ رسول کریم ﷺ کبھی کھڑے ہوتے تھے کبھی بیٹھ جاتے تھے یہاں تک کہ صبح ہوگئی اور اس سے آپ ﷺ کے دونوں پاؤں متورم ہوگئے میں ان پر پھونک مار کر کہتی اے اللہ کے رسولﷺ میری ماں باپ آپﷺ پر قربان ہوں کیا آپ کے پہلے اور اگلے سب گناہ معاف نہیں ہوگئے؟ کیا اللہ تعالیٰ نے آپ سے ایسا نہیں کہا رسول کریم ﷺ نے فرمایا کیا میں اللہ کا شکر گزار بندہ نہ بنوں معلوم ہے اس رات میں کیا ہے؟ میں نے پوچھا اس رات میں کیا ہے؟ آپ ﷺ نے فرمایا اس رات آئندہ سال کی پیدائشیں اور موتیں لکھی جاتی ہیں اور اس رات آئندہ سال کا رزق بھی تقسیم ہوتا ہے اس رات بندوں کے اعمال آسمان کی طرف اٹھائے جاتے ہیں میں نے سوال کیا یا رسول اللہ ﷺ کیا ایسا کوئی شخص نہیں جو اللہ کی رحمت کے بغیر جنت میں جاسکے ؟ آپ ﷺ نے جواب دیا خدا کی رحمت کے بغیر کوئی شخص جنت میں نہیں جاسکتا میں نے پھر عرض کیا آپ ﷺ بھی نہیں جاسکتے؟ آپ ﷺ نے فرمایا ہاں میں بھی اسکی رحمت کے بغیر جنت میں نہیں جاسکتا پھر آپ ﷺ نے اپنے سر پر اپنے ہاتھ پھیرے اور انہیں منہ مبارک پر بھی ملا۔

Your Thoughts and Comments