Aik Sharabi - Joke No. 1149

ایک شرابی - لطیفہ نمبر 1149

ایک شرابی اتنا بلا نوش تھا کہ پیسے نہ ہونے کی وجہ سے ایک روز نشے کی جھونک میں اس نے اپنی بیوی کو بھی ایک بوتل شراب کے عوض بیچ دیا۔ اگلے روز سے اداس‘ بے قرار اور پریشان دیکھ کر اس کے پڑوسی نے کہا۔ ”اب تمہیں پچھتاوا ہو رہا ہے کہ بیوی جیسی نعمت کو کھو کر تم نے اپنے آپ پر ظلم کیا ہے۔“ شرابی نے جواب دیا۔ ”ہاں! اس کے نہ ہونے سے میں بہت اداس ہوں۔ اگر وہ ہوتی تو میں ایک بوتل اور لے سکتا تھا۔“

مزید لطیفے

پروفیسر

professor

مریض

Mareez

سپاہی دیہاتی سے

Sipahi Dehati se

پسینہ سکھا رہا ہوں

paseena sukha raha hon

دس سالہ بچہ

Das sala bacha

لوری

Lori

چابی

Chabi

اپنی بیوی

Apni Biwi

طوطلا آدمی

Totla Admi

کمرہ امتحان

kamra e imtihan

ایک عورت

Aik Aurat

بلا تکلف

bila takalluf

Your Thoughts and Comments