Chuhiya - Joke No. 1515

چوہیا - لطیفہ نمبر 1515

ایک آدمی رات کو سو رہا تھا کہ اس کے اوپر سے ایک چوہیا گزر گئی۔ تو اس نے اٹھ کر شورمچانا شروع کر دیا۔ لوگوں نے اسے تسلی دی کہ کوئی بات نہیں، چوہیا ہی تو گزری ہے۔ وہ صاحب چیخ کر بولے۔ ”آج میرے اوپر سے چوہیا گزری ہے، کل کو بلی گزرے گی پھر کتا گزرے گا۔ پھر گدھا گھوڑا اور پھر بسیں اور ٹرک گزرنے لگیں گے۔ میں تو پل بننا پسند نہیں کروں گا۔ “

مزید لطیفے

مرغی چرا لی

murgi chura le

ایک سکھ

Aik sikh

مرغا

Murgha

سکول ٹیچر

School teacher

سکول

School

احتیاط

ihtiyat

مجید لاہوری

Majeed lahori

انتظار

Intezaar

بہت بڑا دھوکا

bohat bara dhoka

شوہر بیوی سے

Shohar biwi sai

امتحان ہال

Imtihan Hall

کنجوسی

Kanjoos

Your Thoughts and Comments