Do Lal Bag

دو لال بیگ

دو لال بیگ ایک کونے میں بیٹھے باتیں کر رہے تھے۔ ایک نے بتایا۔ ”بھائی کیا بتاوٴں۔ برا وقت آ گیا ہے۔ اوپر والی بلڈنگ میں کسی کم بخت نے ہوٹل کھول لیا ہے۔ چاندی کی طرح چمکتے ہوئے برتن صاف شفاف دھلا ہوا فرش نئی چمکتی دمکتی کرسیاں۔ میں تو بیمار پڑ گیا ہوں۔ اب کہیں اور ٹھکانہ کرنا پڑے گا۔“ ”توبہ توبہ“ دوسرا بولا۔ ”واقعی ایسی گندی جگہ رہنا۔ صحت کے لیے سخت نقصان دہ ہے۔“

Your Thoughts and Comments