Do Waqt Ka Khana Mufat

دو وقت کا کھانا مفت

ملزم:”جج صاحب! رحم کر یں، میں بھوک سے تنگ نہ آتا تو کبھی چوری نہ کرتا۔“ جج:”اسی لئے میں تین سال کے لئے تمہیں ایسی جگہ بھیج رہا ہوں، جہاں تمہیں بھوک تنگ نہیں کرے گی اور دو وقت کا کھانا مفت ملے گا۔“

Your Thoughts and Comments