Kankar - Joke No. 722

کنکر - لطیفہ نمبر 722

مشاعرے میں ایک شاعر اپنا کلام سنا رہے تھے۔ ”زمیں کے زرو‘ فلک کے تارو“ اس کے بعد وہ بھول گئے۔ حاضرین چھوٹے چھوٹے کنکر اٹھا اٹھا کر مارنے لگے‘ اس شاعر نے پھر یوں مصرعہ مکمل کیا… ”اُلوکے پٹھو پتھر نہ مارو“

مزید لطیفے

رشید

Rasheed

ماں بیٹے سے

Maa bete se

ایک آدمی دوسرے سے

Aik admi dusre se

شاہراہ

shahrah

سنہری موقع

sunehri mauqa

آج میری ساس آ رہی ہے

Aaj mere saas aa rahi hai

ایک صاحب گوالے سے

aik sahib gwale se

ویٹ مشین

weight machine

مالکن

malikan

تنقید

Tanqeed

ماہر فلکیات

Mahir e Falkiyat

24 گائیں

24 ghaein

Your Thoughts and Comments