Mujhe Paise Ki Kya Parwah - Joke No. 1134

مجھے پیسے کی کیا پرواہ - لطیفہ نمبر 1134

”مجھے پیسے کی کیا پرواہ! پیسہ تو ہاتھ کا میل ہے۔“ محمود نے یہ کہتے ہوئے جیب سے سو کا ایک نوٹ نکالا اور ماچس کی تیلی سے جلا کر راکھ کر دیا۔ یہ دیکھ کر سلیم نے کہا۔ ”بس اتنی سی ہمت تھی مجھے دیکھو۔“ اس نے چیک بک نکالی اور دس ہزار کا چیک کاٹا‘ دستخط کئے اور جلا کر ہوا میں اڑا دیا۔

مزید لطیفے

مجسٹریٹ ملزم سے

Magistrate mulzim se

کمپنی

Company

چاہت

Chahat

نئی نویلی دلہن

nai noyli dulhan

ایک دوست

Aik dost

جوتوں کی دوکان

jooton ki dokaan

ایک ضدی بیوی

aik ziddi biwi

نئی سیکرٹری

ni secretary

استاد شاگرد سے

ustaad shagird se

شرط

shart

ٹکٹ

Ticket

ایک آدمی ڈاکٹر سے

Aik admi Doctor se

Your Thoughts and Comments