Musafir Aur Conductor

مسافر اور کنڈیکٹر

ایک مسافر بڑا سا گھڑا لے کر بس میں سوار ہوا۔ کنڈیکٹر نے کہا۔ ”دو آنے تمہارے اور چار آنے اس گھڑے کے۔“(اس پر اس مسافر نے کافی دیر تک کنڈیکٹر سے جھگڑا کیا کہ گھڑے کا کرایہ نہ لگے لیکن اس کی ایک نہ چلی اور آخر کار اس نے گھڑا کھولا اور کہنے لگا۔ ”بیٹا باہر نکل آؤ، اس طرح تمہارا کرایہ کم لگے گا۔“

Your Thoughts and Comments