Neelam Gher

نیلام گھر

ایک نیلام گھر میں دوسری بہت سی چیزوں کے علاوہ پنجرے میں بند ایک طوطا بھی رکھا تھا۔ ایک شخص نے طوطا پسند کیا اور پانچ روپے بولی دی لیکن حیرت انگیز طور پر بولی چڑھنے لگی اور دیکھتے ہی دیکھتے دو سو روپے پر جا رکی۔ سودا طے ہو جانے کے بعد اس شخص نے پنجرہ اٹھاتے ہوئے کہا۔ ”یہ طوطا مجھے دو سو روپے میں مہنگا پڑا ہے۔ خدا جانے یہ بولتا ہے یا نہیں“ ”جناب! آپ کے مقابلے پر یہی طوطا بولی دے رہا تھا۔“ نیلام گھر کا مالک بولا۔

Your Thoughts and Comments