Rahgir Aur Sheikh Sahab

راہ گیر اور شیخ صاحب

ایک راہ گیر نے شیخ صاحب کے مکان کی کنڈی بجائی شیخ صاحب نے باہر نکل کر راہ گیر کو حیرت سے دیکھتے ہوئے کہا۔ ”فرمائیے کیسے رحمت فرمائی۔ “ راہ گیر: جناب آپ اپنے لڑکے کو سمجھائیے۔ شیخ صاحب: کیا سمجھاؤں؟ راہ گیر: کہ وہ راہ گیروں پر پتھراؤ نہ کرے۔ وہ کئی مرتبہ مجھے مار چکا ہے، مگر میں ہر بار بچ گیا۔ شیخ صاحب:اگر آپ بچ گئے ہیں تو پتھراؤ کرنے والا میرالڑکا نہیں ہو سکتا ۔”وہ کوئی اناڑی ہوگا۔“

Your Thoughts and Comments