Sunaaoo Miyan - Joke No. 1112

سناوٴ میاں - لطیفہ نمبر 1112

”سناوٴ میاں! زندگی کیسی گذر رہی ہے؟“ ایک سیاح نے مقامی کسان سے دریافت کیا۔ ”بھائی صاحب! بڑے مزے سے‘ مجھے یہ درخت کاٹنے تھے کہ تیز و تند آندھی آئی اور یہ سب خود بخود نیچے گر پڑے۔ ایک دن گھاس کانٹنے کے لیے سوچا تو آسمانی بجلی گری اور تمام گھاس جل کر راکھ ہو گئی اور میں یوں گھاس کاٹنے کی تکلیف سے بچ گیا۔“ کسان نے بتایا۔

مزید لطیفے

جب بینک

Jab Bank

شادی

Shaadi

شوہر

shohar

دودھ والا

Doodh Wala

زبان کی اہمیت

zuban ki ahmiyat

ماں بیٹے سے

Maan bee se

میزبان مہمان سے

mezban mehman se

ایک شخص اپنے دوست سے

Aik shakhs apne dost se

میز ویز ، کرسی ورسی،پلنگ ولنگ وغیرہ وغیرہ

maize ways, kursi vurse, palang valang wager wager

ایک پاگل

Aik Pagal

ایک وزیر پریس کانفرنس

Aik wazir ke press conference

بیٹا باپ سے

Beta Baap Se

Your Thoughts and Comments