Sunaaoo Miyan - Joke No. 1112

سناوٴ میاں - لطیفہ نمبر 1112

”سناوٴ میاں! زندگی کیسی گذر رہی ہے؟“ ایک سیاح نے مقامی کسان سے دریافت کیا۔ ”بھائی صاحب! بڑے مزے سے‘ مجھے یہ درخت کاٹنے تھے کہ تیز و تند آندھی آئی اور یہ سب خود بخود نیچے گر پڑے۔ ایک دن گھاس کانٹنے کے لیے سوچا تو آسمانی بجلی گری اور تمام گھاس جل کر راکھ ہو گئی اور میں یوں گھاس کاٹنے کی تکلیف سے بچ گیا۔“ کسان نے بتایا۔

مزید لطیفے

ایک صاحب نے گداگر کو

aik sahib ne gadagar ko

استاد شاگرد سے

Ustad Shagird se

ڈاکڑ اور مریض

Dr aur mareez

نذیر احمد زاپد حسین سے

Nazir ahmad zapped hussain se

بیٹا

Beta

خاوند کی تعریف

khawand ki tareef

بے وقوف

bewakoof

عادت

Aadat

مشہور شاعر

mashoor shayar

سالگرہ

salgirah

گدھے کا گوشت

gadhe ka gosht

ایک بڑا شکاری

aik bara shikari

Your Thoughts and Comments