Sunaaoo Miyan - Joke No. 1112

سناوٴ میاں - لطیفہ نمبر 1112

”سناوٴ میاں! زندگی کیسی گذر رہی ہے؟“ ایک سیاح نے مقامی کسان سے دریافت کیا۔ ”بھائی صاحب! بڑے مزے سے‘ مجھے یہ درخت کاٹنے تھے کہ تیز و تند آندھی آئی اور یہ سب خود بخود نیچے گر پڑے۔ ایک دن گھاس کانٹنے کے لیے سوچا تو آسمانی بجلی گری اور تمام گھاس جل کر راکھ ہو گئی اور میں یوں گھاس کاٹنے کی تکلیف سے بچ گیا۔“ کسان نے بتایا۔

مزید لطیفے

استاد شاگرد سے

Ustad Shagird se

روشن

Roshan

دفن

Dafan

رک جاؤ

Ruk Jao

چار لڑکیاں

chaar larkiyan

ضمیر

Zameer

دو پاگل

do pagal

دوست دوسرے دوست سے

dost dosray dost se.

ایڈیٹر افسانہ نگار سے

editor afsana nigaar se

شرابی

Sharabi

استاد اور شاگرد

ustad aur shagird

بے شک

be shak

Your Thoughts and Comments