Totai Ki Neelami - Joke No. 611

طوطے کی نیلامی - لطیفہ نمبر 611

ایک دفعہ ایک بولنے والے طوطے کی نیلامی ہو رہی تھی‘ طوطا ایک کونے میں رکھا ہوا تھا بولی لگنے لگی۔ ایک آدمی نے کہا:”3 ہزار روپے“ دوسرے نے کہا:”5ہزار روپے“۔ پہلے آدمی نے کہا:”10 ہزار“ ایک کونے سے آواز آئی:”20 ہزار روپے“۔ پہلے آدمی نے دوبارہ کہا:”25 ہزار روپے“ دوبارہ کونے سے آواز آئی:”30 ہزار روپے“ پہلے آدمی نے دوبارہ کہا:”40 ہزار روپے“۔ اور طوطا نیلام ہو گیا گھر آ کر مالک نے کوشش کی کہ طوطا بولے لیکن طوطا نہیں بولا۔ تنگ آ کر وہ اسے دوبارہ پہلے مالک کے پاس لے گا اور کہا:”یہ طوطا بولتا نہیں ہے“۔ پہلے مالک نے جواب دیا:”یہ کیسے نہیں بولتا‘ یہی تو تمھارے ساتھ بولی لگا رہا تھا“۔

مزید لطیفے

ایک شخص

aik shakhs

ریفری

referee

عدالت

adalat

شادی

shaadi

ایک بیوقوف اور اسکی بیوی

ek bewaqoof aur uski biwi

برٹش ایرویز

british airways

بھکاری

bhikari

دو دوست

do dost

ایک لیڈر

Aik Leader

ایک آدمی

Aik Admi

انسپکٹر صاحب

inspector sahab

استاد شاگرد سے

ustaad shagird se

Your Thoughts and Comments