Totai Ki Neelami

طوطے کی نیلامی

ایک دفعہ ایک بولنے والے طوطے کی نیلامی ہو رہی تھی‘ طوطا ایک کونے میں رکھا ہوا تھا بولی لگنے لگی۔ ایک آدمی نے کہا:”3 ہزار روپے“ دوسرے نے کہا:”5ہزار روپے“۔ پہلے آدمی نے کہا:”10 ہزار“ ایک کونے سے آواز آئی:”20 ہزار روپے“۔ پہلے آدمی نے دوبارہ کہا:”25 ہزار روپے“ دوبارہ کونے سے آواز آئی:”30 ہزار روپے“ پہلے آدمی نے دوبارہ کہا:”40 ہزار روپے“۔ اور طوطا نیلام ہو گیا گھر آ کر مالک نے کوشش کی کہ طوطا بولے لیکن طوطا نہیں بولا۔ تنگ آ کر وہ اسے دوبارہ پہلے مالک کے پاس لے گا اور کہا:”یہ طوطا بولتا نہیں ہے“۔ پہلے مالک نے جواب دیا:”یہ کیسے نہیں بولتا‘ یہی تو تمھارے ساتھ بولی لگا رہا تھا“۔

Your Thoughts and Comments