بند کریں
مزاح مزاحیہ ادب نکھٹّو کی بیوی

مزید مزاحیہ ادب

- مزید مضامین

مزید عنوان

نکھٹّو کی بیوی

نکھّٹو تھا بہت ہی بے سہارا
اکیلا پھرتا رہتا تھا بچارا
نہ زندہ باپ تھا نہ ماں بچاری
بہت جلدی وہ دنیا سے سدھاری
نکھٹّو کو ملی مشکل سے بیوی
فرج لائی نہ لائی کوئی ٹی وی
بکس کپڑوں کا بس ایک چارپائی
نکھٹّو کی دلہنیا ساتھ لائی
وہ خود جو آگئی تھی کیا یہ کم ہے
نکھٹّو کو کہا اب کوئی غم ہے
نظر رکھنے کو تھی اُس پر وہ آئی
نہ اب تا کے گا ہر اک کی لُگائی
چلے گی ساتھ ایسے سینہ تانے
سبھی ہوں گے محلّے میں دوانے
نکھٹّو کو بھلا اب کون جانے
بنیں چاہیں ہزاروں ہی فسانے
وہ سب کھٹمل جو گھر کے پالتو تھے
وہ لائی تھی سبھی جو فالتو تھے
نکھٹّو کوزمیں سے یوں اٹھایا
اُسے اُس چارپائی پر سلایا
جو کاٹا رات بھر سب کھٹملوں نے
کہاں کب آنکھ کھولی ولولوں نے
دلہنیا کا نکھٹّو سو نہ پایا
مزا شادی کایوں اس کو چکھایا

(0) ووٹ وصول ہوئے