Motapa Kam Karne Ke Qeemti Totkay

موٹاپا کم کرنے کے قیمتی ٹوٹکے

بدھ مارچ

Motapa Kam Karne Ke Qeemti Totkay
تحریر: حسن نصیر سندھو

زن، زر اور ز مین کے بعد اس صدی کی سب سے بڑی پر یشانی موٹاپا کو قرار دینا غلط نہ ہو گا۔اس مسئلے کا آسان حل پیش کر نے کی جسارت کررہا ہو ں اُ مید ہے افاقہ ہو نہ ہو پسند ضرور آئے گی تحر یر۔
صدیو ں سے محبوب اگر سمارٹ ہو تو اُسے چن ماہیا کہا جاتا ہے اور اگر موٹا ہو تو ڈھول ماہیا کہلاتا ہے۔

اور لفظ ڈھول ما ہیا میں چاشنی اور محبت دونوں ذیادہ جھلکتی ہے۔ اس لیے ایک محبو ب اگر موٹا بھی ہو تو کیا فرق پڑتا ہے۔اور ویسے بھی جسں لڑکی کو اس کے وزن بڑھنے کا ڈر نہیں اس کو دنیا کی کوئی طاقت نہیں ڈرا سکتی اور جو لڑکے شادی کے لیے موٹی لڑکیوں کو انکار کر د یتے ہیں ان کی بیو یاں شادی کے ایک سال بعد ہی موٹی ہو جاتی ہیں۔

(جاری ہے)

مشتاق احمد یوسفی
 ہم نے آج تک کسی مولوی،کسی فرقے کے مولوی کی طبیعت خراب نہیں دیکھی،نہ کسی مولوی کا ہارٹ فیل ہوتے سنا، جانتے ہو کیا وجہ ہے؟ پہلی وجہ تو یہ کہ مولوی کبھی ورزش نہیں کرتے۔

دوسری یہ کے سادہ غذا اور سبزی سے پرہیز کرتے ہیں۔پس ثابت ہوا موٹاپا نہ تو کسی بیماری کا باعث ہے،نہ شادی میں رکاوٹ ورنہ مولویوں کی چار چارشادیاں ہوں۔
ویسے بھی وہ دوست جو گرین ٹی پی کر وزن کم کرنے کے چکروں میں ہیں،جان لیں وزن تب تک کم نہ ہو گا جب تک پہاڑی پر خود جا کر پتیاں توڑ کر نہ لائیں۔
اب وزن کم کرنے کے طریقے بغیر ڈیئیٹنگ اور بغیر ورزش کے ملاحظہ ہوں۔

موٹے شخص کو کپڑے ہمیشہ ڈیہلے پہننے چاہیں تاکہ جل تھل کرتا گوشت نظر نہ آئے اور نہ ہی نظر لگنے کا ڈر ہو۔اگر تصویر کھینچنا مقصود ہو تو اپنے سے موٹے شخص کے ساتھ بنوائیں تا کہ آپکی بیوٹی کھل کر سامنے نہ آئے۔اگر وزن کرنا مقصود ہو تو ہمیشہ ایک پاؤں زمین پر اور ایک میشن پر رکھیں اسطرح آپ ایک شان بے نیازی سے اپنی نگاہ وزن بتا نے والی سو ئی پر ڈال سکتے ہیں۔

سب سے اہم دبلے پتلے اور اپنی ڈانٹ کا کیلوریز میں حساب کتاب رکھنے والے دوستوں سے برتعلق توڑ دیں جو انہیں احساس محرومی کا شکار کر دے گا۔ اور خود کو یقین دلائیں کہ موٹاپے کا احساس صرف اور صرف آپ کے دماغ کی خرافات ہیں ۔روزانہ 100مرتبہ یہ ورد کریں۔ آئی ایم بیوٹی فل، آئی ایم پرفیکٹ اور پھر ذرا جھو م کر بولیں،آئی ایم سمارٹ ۔ہر حقیقت بتانے والی چیز یعنی آئینہ توڑ کر باہر پھینک دیں دھیان رکھیں حقیقت بتانے والے کا منہ رہ نہ جائے۔

 
کھانا ہمیشہ زیادہ بنائیں تاکہ بچے ہوئے کھانے کو دیکھ کر احساس ہو کہ کم کھایا ساتھ ہی ساتھ آپ کسی بھی ڈاکٹر کو فیس دے کر مکمل تندرستی کا سرٹیفکیٹ حاصل کر سکتے ہیں۔
آپ کو اپنے گھر میں جاپانی سو لر پہلو ا نو ں کی تصو یر یں آ و یز ا ں کر نی چا ہیے اور روزانہ کی بنیا د پر متعدد با ر ورزش سے بھا گیں۔ زیادہ محنت کا خیا ل ہو تو ورزش کے خیال تک سے بھا گیں اور بقیہ وقت آرام سے گزاریں۔ وزن پر دھیان دینے والے دوستوں کو نظر چیک کرنے کا مشورہ دیں۔ آخر آپ ایک ذمہ دار شہری ہونے کے نا طے دوسروں کی صحت کا خیا ل رکھیں اور ان کے حصے کا کھانا بھی کھا ئیں تا کہ دوسرے حضرات مو ٹاپے سے بچ سکیں۔

Your Thoughts and Comments