آزادی کشمیریوں کابنیادی حق ہے جو انہیں ہر صورت ملنا چائیے، مقررین

بدھ 27 اکتوبر 2021 16:03

اٹک (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 27 اکتوبر2021ء) جموں وکشمیر پر بھارت کے غاصبانہ قبضے کے خلاف یوم سیاہ کے حوالے سے گورنمنٹ ایم سی بوائز سکول اٹک میں سیمینار کا اہتمام کیا گیاجس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرفنانس اینڈ پلاننگ اٹک مر ضیہ سلیم، سی ای او ایجوکیشن اٹک ملک محسن عباس، ڈی او سکینڈری اٹک اکرم ضیاء، ڈی او ایلیمنٹری اٹک ساجدہ مختار سمیت ضلعی افسران، سیاسی، سماجی و مذہبی ارکان کی بڑی تعداد موجود تھی۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ آزادی کشمیریوں کابنیادی حق ہے جو انہیں ہر صورت ملنا چائیے،کشمیریوں کو آزادی نہ دے کر انکا  بنیادی حق پا مال کیا جا رہا ہے جو انتہائی زیادتی ہے،ضرورت اس امر کی ہے کہ اقوام عالم کشمیریوں کے ساتھ کھڑے ہوں اور بھارت کو مجبور کریں کہ وہ کشمیریوں کے حق خود ارادیت کا احترام کرے اور انہیں ان کی مرضی کے مطابق فیصلہ کرنے کا اختیار دے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ کشمیری عوام ڈوگرہ راج کے وقت سے آزادی کے لیےء کو شاں ہیں اور آج بھارتی حکومت ان پر آر ایس ایس کی ایما پر ظلم وستم ڈھا کر ان کی آواز کو دبانا چاہتا ہے جو ممکن نہیں ہے، ظلم وستم کے ذریعے کشمیریوں کے حق خود ارادیت اور آزادی کی آواز کو نہیں دبایا جا سکتا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی حکومت اور پاکستان کی عوام کشمیریوں کی اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھیں گے،اب وقت آگیا ہے کہ کشمیر کا مسئلہ اقوام متحدہ کی قراردادوں اور کشمیری عوام کی امنگوں کے مطابق حل کیا جائے،جس کا ان سے وعدہ کیا گیا ہے اور بھارت کو مجبور کیا جائے کہ وہ اپنی ریاستی دہشت گردی بند کرے اور کشمیری عوام کو اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کرنے کا اختیار دے۔

انہوں نے کہا کہ کشمیر پاکستان کا حق تھا مگر انگریزوں نے بھارت کے ساتھ ساز باز کر کے خطے کی جغرافیائی حیثیت تبدیل کر دی۔ انہوں نے کہا کہ وہ دن دور نہیں جب کشمیری عوام کو بھارت کے ناجائز تسلط سے آزادی حاصل ہوگی اور وہ آزاد فضاء میں سانس لیں گے اور آزاد زندگی بسر کریں گے۔ بھارت نے مقبوضہ کشمیر کی مخصوص آئینی حیثیت تبدیل کر کے اقوام متحدہ کے معاہدوں کی سنگین خلاف ورزی کی ہے انہوں نے کہا کہ کشمیر پاکستان کی شہء رگ اور جو بچہ بھی پاکستان میں پیدا ہوتا ہے وہ پہلے کشمیر کا لفظ سیکھتا ہے۔

یہ ہماری ذمہ داری ہے کہ ہم آج کے مشکل ترین حالات میں کشمیری عوام کے ساتھ کھڑے ہوں اور ہر سطع پر ان کی حمایت جاری رکھیں۔ تقریب میں حا ضرین کی بڑی تعداد نے شرکت کی انہوں نے ہا تھوں میں پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر کشمیر کی آزادی کے نعرے درج تھے۔ تقریب سے دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا اور بھارت کے کشمیر پر غاصبانہ قبضے،ظلم اور بربریت کی بھرپور مذمت کی۔آخر میں واک کا اہتمام بھی کیا گیا۔تقریب میں طلباء طالبات نے تقاریر،ملی نغمے اور ٹیبلوز بھی پیش کیے۔

اٹک شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments