تھانہ اٹک خورد کے پولیس ملاز م کے ہاتھوں تشدد کا نشانہ بننے والے بزرگ شہری کی آواز اٹھانا مقامی صحافی کا جرم بن گیا

5پولیس اہلکار آصف کی جانب سے صحافی پر سوشل میڈیا کے ذریعے بلیک میلر، بھتہ خور اور اٹک خوردمیں چکلوں کی پشت پناہی کرنے جیسے بیہودہ الزمات لگا دئیے گئے د* صحافی کی ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر سے الزمات کی انکوئری کی درخو ا ست

ہفتہ 22 مئی 2021 21:38

اٹک خورد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 22 مئی2021ء) تھانہ اٹک خورد کے پولیس ملاز م کے ہاتھوں تشدد کا نشانہ بننے والے بزرگ شہری کی آواز اٹھانا مقامی صحافی کا جرم بن گیا، پولیس اہلکار آصف کی جانب سے صحافی پر سوشل میڈیا کے ذریعے بلیک میلر، بھتہ خور اور اٹک خوردمیں چکلوں کی پشت پناہی کرنے جیسے بیہودہ الزمات لگا دئیے گئے، صحافی نے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر سے الزمات کی انکوئری کی درخو ا ست کردی ۔

تفصیلات کے مطابق مقامی صحافی فلک شیرخان کی جانب سے پولیس ملازم تھانہ اٹک خورد پی ایس آصف کے ہاتھوں تشدد سے نشانہ بننے والے بزرگ کی آواز پولیس کے اعلی آفسران تک پہنچا نے پر پی ایس آصف کی جانب سے صحافی پر بلیک میلر ،بھتہ خور اور اٹک خوردمیں چکلوں کی پشت پناہی کرنے جیسے بیہودہ الزمات سوشل میڈیا پرلگائے گئے ہیں جنکا باقاعدہ ثبوت بھی موجود ہے ۔

(جاری ہے)

صحافی فلک شیرخان کا کہنا ہے کہ صحافی حضرات پولیس کے اچھے کاموں کی خبریں شائع بغیر کسی لالچ کے کرتے ہیں اور کرتے رہیں گے ،صحافی اگر اپنا قلم ظالم کیخلاف اور مظلوم کے حق پر بغیر کسی ڈر خوف کے نہ لکھے تو اسکے قلم اور صحافی ہونے کاکوئی فائدہ نہیں۔ صحافی کاکام ہی یہی ہوتا ہے کے معاشرے اور اداروں میں ہونے والے غلط اور غیر قانونی کاموں کی نشاندہی کرکے سامنے لائے اور بلاخوف خطر حق سچ کی خبرلگائے۔

انہوں نے کہا میں بحیثیت صحافی ڈسٹرکٹ پولیس آفیسرسیدخالد حمدانی سے پولیس ملازم تھانہ اٹک خورد پی ایس آصف کی طرف سے اپنے اوپرلگائے گئے بیہودہ قسم کے الزمات کی انکوئری کی درخو ا ست کرتاہوں اور اس سے بھتہ مانگنے ،بلیک میل کرنے اور اٹک خورد میں وہ کون سے چکلے ہیں جنکے بند ہونے سے مجھے بہت تکلیف ہے انکے ثبوت پیش کرنے کا مطالبہ کرتاہوں۔

متعلقہ عنوان :

اٹک شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments