دارلقضاء سوات نے ملاکنڈ لیویز سے ایف سی قوانین کے تحت ریٹائرمنٹ کے خلاف حکم امتناعی جاری کردیا

اتوار اپریل 18:16

بٹ خیلہ(اردو پوائنٹ اخبار آن لائن- 7 اپریل- 2013) دارلقضاء سوات نے ملاکنڈ لیویز سے ایف سی قوانین کے تحت ریٹائرمنٹ کے خلاف حکم امتناعی جاری کردیا، ملاکنڈ لیویز کے 70 سے زیادہ پوسٹ کمانڈروں، حولداران اور دیگر ملازمین نے اپنے ریٹائرمنٹ کے خلاف دارلقضاء سوات میں رٹ دائر کی تھی۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطابق ملاکنڈ لیویز کے 70 کے قریب پوسٹ کمانڈروں (ایس ایچ اوز) حولداران اور دیگر ملازمین نے پشاور ہائی کورٹ مینگورہ سرکٹ بینچ / دارلقضاء سوات میں ایف سی قوانین کے تحت اپنے ریٹائرمنٹ کے خلاف درخواست جمع کرائی تھی گزشتہ روز لیویز اہلکاروں کے وکیل امجد خان ایڈوکیٹ کے دلائل سننے کے بعد معزز عدالت کے جسٹس داود اور جسٹس اسدللہ خان چمکنی نے لیویز ریٹائر منٹ کے خلاف 17 اپریل تک حکم امتناعی جاری کرکے متعلقہ حکام سے وضاحت طلب کی ہے معزز عدالت سے حکم ا متناعی جاری ہونے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے درخواست گزاروں پوسٹ کمانڈر زفریداللہ خان، امیر زمان،غفور خان اور حولدار عمر واحد نے کہا کہ ملاکنڈ لیویز کو 1978 میں پولیس ڈیوٹی تقویض کی گئی ہے ملاکنڈ لیویز کے تفتیش پر اب بھی بہت سے ملزمان عمر قید اور پھانسی کے سزاوار ہوچکے ہیں مگر پھر بھی ملاکنڈ لیویز کو پولیس مراعات دینے کے بجائے انہیں ایف سی کے قوانین کے تحت ریٹائرڈ کیا جارہا ہے جو کہ قوانین اور انصاف کے خلاف ہے۔

متعلقہ عنوان :

بٹ خیلہ شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments