عمران خان آئی ایم ایف کا کٹھ پتلی وزیر اعظم ہے ، حالیہ بجٹ بھی آئی ایم ایف کا اپنے مفادات کیلئے خودتیار کردہ ہے، مشتاق احمد خان

ٹیپو سلطان کو اپنا ہیرو قرار دینے والا دراصل بہادر شاہ ظفرکا پیرو کار بنا ہواہے جس طر ح مغلیہ باشاد ہ ایسٹ انڈیا کمپنی کا ایجنٹ تھا اسی طرح ہمارے وزیر اعظم اور موجودہ حکومت کو ملک وقوم کے مفادات کے بر عکس آئی ایم ایف کے مفادات عزیز ہیں،مشترکہ لیڈر شپ کنونشن سے خطاب

پیر جون 22:10

بٹ خیلہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 17 جون2019ء) جماعت اسلامی کے صوبائی امیر مشتاق احمد خان نے کہا ہے کہ عمران خان آئی ایم ایف کا کٹھ پتلی وزیر اعظم ہے جبکہ حالیہ بجٹ بھی آئی ایم ایف کا اپنے مفادات کیلئے خودتیار کردہ ہے انھوں نے کہا کہ ٹیپو سلطان کو اپنا ہیرو قرار دینے والا دراصل بہادر شاہ ظفرکا پیرو کار بنا ہواہے جس طر ح مغلیہ باشاد ہ ایسٹ انڈیا کمپنی کا ایجنٹ تھا اسی طرح ہمارے وزیر اعظم اور موجودہ حکومت کو ملک وقوم کے مفادات کے بر عکس آئی ایم ایف کے مفادات عزیز ہیں۔

(جاری ہے)

ان خیالات کا اظہار انھوں نے گذشتہ روز فشنگ ہٹ چکدرہ میں جماعت اسلامی ضلع بونیر اور ملاکنڈ کے مشترکہ لیڈر شپ کنونشن سے خطاب کرتے ہو ئے کیا صو بائی سیکر ٹری اطلاعات سید صہیب الدین کا کا خیل کے علاوہ دونوں اضلاع کے امراخورشید ربانی اور سیدحلیم با چہ نے بھی خطاب کیا صوبائی امیر جماعت نے اپنے خطاب میں مذید کہا کہ تبدیلی سرکاری ماضی کی کرپٹ ونا اہل حکومتوں کا تسلسل ہے جبکہ موجودہ کابینہ کے آدھے وزراء مشرف مسلم لیگ اور پیپلز پارٹی کے دورمیں بھی وزیر رہے عقیدہ ختم نبوت سودی نظام مہنگائی اور اب غلامانہ شرا ئط پر آئی ایم ایف سے قرضوں کا حصول ماضی کی پالیسیوں کا ہی تسلسل ہے ٹیپو سلطان کو اپنا ہیرو قرار دینے والا وزیر اعظم عمران خان دراصل بہادر شاہ ظفر کا پیرو کار بنا ہوا ہے جس کا واضح ثبوت آئی ایم ایف سے انتہائی سخت اور غلامانہ شرائط پر قرضوں کا حصول ہے جس کی ماضی میں کہیں مثال نہیں ملتی انھوں نے کہاکہ موجود بجٹ ملک کی تاریخ کا بدترین اور ظا لمانہ بجٹ ہے جس میں ایوان صدر اور وزیر اعظم ہائوس کے اخراجات میں اضا فہ امیر اور اونچے طبقے کو مراعات دی جارہی ہیںجبکہ سارا بوجھ غریب پر ڈال دیا گیا ہے انھوں نے کہاکہ سپریم کورٹ کے دیانتدار اور قابل ترین جج جسٹس قاضی فائز عیٰسی کوکے خلاف ریفرنس آزاد عدلیہ اور انصاف کے پر کاٹنے کے مترادف ہے انھوں نے کہا کہ یہ دراصل جسٹس فائز کو کوئٹہ بم دھماکے اور فیض آباد دھرنے بارے سیکورٹی ایجنسیوں کے کردار پراٹھانے والے سوالوں کی سزا دینے کا منصوبہ ہے جیسے کسی بھی صورت میں کامیاب نہیں ہو نے دیا جائے گاکیونکہ جماعت اسلامی آزاد جج اورعدلیہ کی قائل ہے انھوں نے کہاکہ حکومت نے اپنی دس ماہ کی کارکردگی میں کسی بھی قسم کی اہلیت صلاحیت اور خوبی کا مظاہر ہ نہیں کیا ان نا اہل حکمرانوں کی تمام پالیسیاں منصوبے اور اقدامات محض فراڈ اور دھوکے کے علاوہ کچھ نہیںحکومت نے اپنے پہلے ہی سال میں معیشت کو آئی سی یو میں پہنچا کر ونٹی لیٹرپر ڈال دیا ہے جبکہ عوام کو مہنگائی کے بدترین سونامی کا سامنا ہے انھوں نے کہاکہ ان ہی حالات کے پیش نظرجماعت اسلامی نے شہر اقبا ل سے احتجاجی تحریک کا آغاز کر دیا اب بجلی وگیس بلوں اور اشیاء صرف کی قیمتوں میں مذید اضا فہ تسلیم نہیں کیا جائے گا انھوں نے شرکاء کو ہدایت کہ وہ اس تحریک کی کامیا بی اور بلدیاتی انتخابات کی تیاری کیلئے صف بندی کریں ویلج ونیبر ہوڈ کونسل کی سطح پر رکنیت و تنظیم سازی کریںجبکہ نوجوانوں اور خواتین کو منظم کرنے پر خا ص توجہ دیںکیونکہ آبادی کے نصب حصے خواتین اور 64فیصد یوتھ کو ساتھ ملائے بغیر کوئی تحریک واحتجاج کامیاب نہیں ہو سکتا۔

بٹ خیلہ شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments