ڈھاڈر گردنواح میں سوئی گیس بحرانی کیفیت میں تبدیل

علاقہ مکین گیس نہ ملنے کی وجہ سے مجبوری میںبازار سے لکڑیاں خرید کر کھانا پکانے اور ناشتہ کرنے کا عادی بن گئے، عوامی حلقوں کا نو ٹس لینے کا مطالبہ

اتوار اکتوبر 15:50

بولان(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 18 اکتوبر2020ء) ڈھاڈر گردنواح میں سوئی گیس بحرانی کیفیت میں تبدیل ،علاقہ مکین گیس نہ ملنے کی وجہ سے مجبوری میںبازار سے لکڑیاں خرید کر کھانا پکانے اور ناشتہ کرنے کا عادی بن گئے ہیں سوئی گیس کی صبح اور شام کے اوقات کار میں کم پریشر میں چھوڑا جاتا ہے جس سے ایک وقت کا کھانا بھی تیار نہیں ہوتا جبکہ شہریوں کو ہر ماہ باقاعدگی کے ساتھ ہزاروں کا بل تھما دیا جاتا ہے بالا حکام نوٹس لیں تفصیلات کے مطابق ضلع کچھی کے صدر مقام ڈھاڈر میں سوئی گیس انتظامیہ کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے علاقہ مکین گیس کیلئے ترس گئے ہیں گیس پریشر انتہائی کم پریشر میں صبح اور شام میں صرف دو وقت چھوڑا جاتا ہے جبکہ چوبیس گھنٹوں میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ بھی بڑھا دیا گیا ہے جس سے علاقے میں گیس ناپید ہوچکا ہے صبح اور شام کے اوقات کار میں گیس انتہائی کم پریشر میں چھوڑا جاتا ہے جس سے ایک وقت کی روٹی بمشکل تیار ہوجاتی ہے گیس کی انتہائی کم پریشر اور طویل لوڈشیڈنگ دورانیہ کی وجہ سے شہری بحالت مجبوری بازار سے مہنگے داموں لکڑیاں خرید کر گزارہ کررہے ہیں جبکہ دوسری جانب سے گھریلوں امور کیلئے خواتین کو بھی شدید مشکلات سے دوچار ہونا پڑھتا ہے گیس انتظامیہ کے مطابق ڈھاڈر شہر میں ریکوری نہ ہونے کے برابر ہے شہر کے اکثریت اپنے بل ماہانہ جمع کرنے سے قاصر ہیں جسکی وجہ سے ماہانہ گیس ریکوری چاجز جمع نہیں ہوتے جس سے لوڈشیڈنگ اور کم پریشر چھوڑا جاتا ہے جبکہ گیس چوری ہونے سے علاقے میں گیس کا ضیا ع بھی ہوتا ہے عوامی اور اور سیاسی حلقوں نے اعلیٰ حکام سے پر زور مطالبہ کیا ہے کہ ڈھاڈر میں جان بوجھکرگیس بحران پیدا کیا جارہا ہے جس کے ذمہ داران کو خلاف کاروائی کی جائے اور جو چوری میں ملوث ہیں انکے غیر قانونی کنکشنز منقطع کیئے جائیں تاکہ عوام کو سوئی گیس کی زحمت کا سامنا نہ کرنا پڑے

متعلقہ عنوان :

بولان شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments