سینیٹ انتخابات میں بدترین ہارس ٹریڈنگ ہوئی، عبدالغفورحیدری کا اعتراف

اگر مسلم لیگ ن کی قیادت ملک میں موجود نہ ہوتی تو زرداری کا نوازشریف کی وطن واپسی کا مطالبہ درست تھا، گفتگو

جمعرات مارچ 00:03

چارسدہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 17 مارچ2021ء) جمعیت علماء اسلام پاکستان کے رہنما سینیٹر عبدالغفور حیدری نے سینیٹ انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ کا اعتراف کرلیا۔میڈیا سے گفتگو میں اپوزیشن اتحاد کے مشترکہ امیدوار برائے ڈپٹی چیئرمین نے انکشاف کیا کہ چیئرمین و ڈپٹی چیئرمین سینٹ کے انتخابات میں بدترین ہارس ٹریڈنگ ہوئی۔اٴْن کا کہنا تھا کہ سینیٹ انتخابات میں ضمیر فروش سینیٹرز کو منظر عام پر لانا چاہیے۔

عبدالغفور حیدری کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم میں شامل بعض پارٹیوں کی قیادت پر دباؤ ہے، جوجماعتیں صورت حال کا مقابلہ نہیں کرسکتیں تو انہوں نے مولانا کا ساتھ کیوں دیا ۔ عبدالغفور حیدری کا کہنا تھا کہ جے یو آئی نے اکیلے درجنوں ملین مارچ کیے اور ہم مستقبل میں بھی کرسکتے ہیں مگر جمہوریت کی بحالی کے لیے سب کا ایک ساتھ چلنا ضروری ہے۔

(جاری ہے)

جے یو آئی کے سینیٹر کا کہنا تھا کہ میری ذاتی رائے ہے کہ پی پی پی مستقبل میں پی ڈی ایم کا حصہ نہیں ہو گی، زرداری کا نواز شریف کو ملک واپس بلانے کا مطالبہ دراصل بہانہ ہے جو سمجھ سے بالاتر ہے۔

اٴْن کا کہنا تھا کہ اگر مسلم لیگ ن کی قیادت ملک میں موجود نہ ہوتی تو زرداری کا نوازشریف کی وطن واپسی کا مطالبہ درست تھا، آج ملک میں کوئی طبقہ ایسا نہیں جو حکومت کے خلاف سراپا احتجاج نہ ہو۔

چار سدہ شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments