باپ بلوچستان کے حقوق کی ضامن ،قیام صوبے ، وفاق میں عوام کی نمائندگی کیلئے عمل میں لایا گیا ،اعجاز خا ن سنجرا نی

ضرورت پڑنے پر باپ کی قیادت بلوچستان کے حقوق چھیننے کی صلاحیت بھی رکھتی ہے، رہنماء بلوچستان عوامی پارٹی

جمعہ اگست 16:41

دالبندین(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 28 اگست2020ء) بلوچستان عوامی پارٹی کے رہنماؤں نے دعویٰ کیا ہے کہ اگلے انتخابات میں ان کی جماعت بلوچستان میں کلین سویپ کرکے سنگل پارٹی حکومت تشکیل دے گی۔ دالبندین میں منعقدہ باپ پارٹی کی ورکزز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے پارٹی کے ڈویژنل آرگنائزر اعجاز خان سنجرانی، سابق صوبائی وزیر میر کریم نوشیروانی، آرگنائزنگ کمیٹی کے سربراہ ملک خدابخش لانگو، مرکزی سیکرٹری اطلاعات فتح جمالی و دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مخالفین باپ پارٹی پر بیجا تنقید کرتے ہیں کیونکہ انھیں معلوم ہے کہ اگلی حکومت بھی باپ کی ہوگی۔

ان کا کہنا تھا کہ باپ پارٹی بلوچستان کے حقوق کی ضامن ہے جس کا قیام صوبے اور وفاق میں عوام کی بھرپور نمائندگی کے لیے عمل میں لایا گیا اور ضرورت پڑنے پر باپ کی قیادت بلوچستان کے حقوق چھیننے کی صلاحیت بھی رکھتی ہے۔

(جاری ہے)

ان کا کہنا تھا کہ پہلے بلوچستان کے فیصلے اسلام آباد میں ہوتے تھے لیکن بلوچستان عوامی پارٹی نے اپنی قیام کے بعد صورتحال تبدیل کردی۔

ان کا کہنا تھا کہ ان کے جماعت کی قیادت تقاریر کی بجائے عملی اقدامات پر یقین رکھتی ہے وفاقی پی ایس ڈی پی میں بلوچستان کے منصوبوں کی اخراج پر وزیر اعلی بلوچستان اور باپ پارٹی کے صدر جام کمال خان نے بروقت اقدامات اٹھاتے ہوئے وفاقی حکومت کو بلوچستان کی منصوبوں کے لیے فنڈز جاری کروانے پر مجبور کیا۔ مقررین کا کہنا تھا کہ موجودہ صوبائی حکومت نے وزیر اعلی جام کمال خان کی قیادت میں صحت، تعلیم، آبنوشی، مواصلات و دیگر شعبوں میں کافی بہتری لائی جبکہ تمام شعبہ جات پر مسلسل کام کیا جارہا ہے۔

.مقررین نے کہا کہ قوم پرستوں اور مذہبی جماعتوں نے نعروں کے سوا صوبے کے عوام کو کچھ بھی نہیں دیا اس لیئے صوبے کے احساس محرومیوں میں اضافہ ہونے لگا مگر باپ پارٹی نعروں کی بجائے عملی خدمت پر یقین رکھتی ہے جس کی واضح مثالیں دالبندین سمیت چاغی نوکنڈی اور دیگر علاقوں میں مختلف قسم کے میگا پروجیکٹس کی منظوری شامل ہیں جس سے عوام کی تقدیر کو بدلا جاسکتا ہے۔

ورکرز کنونشن کے دوران اعجاز خان سنجرانی نے بلوچستان عوامی پارٹی کے نومنتخب ضلعی صدر میر اسفندیار یارمحمدزئی اور ضلعی جنرل سیکرٹری صدرالدین عینی سے حلف لیا۔ جلسہ عام میں دالبندین کے علاوہ چاغی نوکنڈی تفتان اور دیگر علاقوں سے بڑی تعداد میں باپ پارٹی کے رہنماؤں اور معتبرین نے شرکت کی اور پنڈال میں تل دھرنے کی جگہ تک نہیں تھی۔ ورکرز کنونشن سے نومنتخب عہدیداروں سمیت سردار غیاث درانی، سردار علی دوست مینگل، حاجی امان اللہ کبدانی، حاجی رفیق ساسولی، حاجی اشرف حسن زئی، ملک مقصود سمالانی ودیگر نے بھی خطاب کیا۔

اس دوران مختلف علاقوں سے سینکڑوں افراد نے بلوچستان عوامی پارٹی میں شمولیت کا اعلان کردیا۔ ورکرز کنونشن کی ابتداء میں چیف آف چاغی الحاج سردار خان تاج محمد خان سنجرانی کے لیے فاتحہ خوانی کرکے ان کی مغفرت کے لیے اجتماعی دعا کرائی گئی۔ بعد ازاں مسجد روڈ دالبندین میں بلوچستان عوامی پارٹی کے ڈویژنل آرگنائزر میر اعجاز خان سنجرانی۔سابقہ صوبائی وزیر میر عبدالکریم نوشیروانی۔ملک خدابخش لانگو نے ضلعی دفتر کا دفتر کا افتتاح کیا۔جبکہ جلسہ عام کے شرکاء اور پارٹی قائدین کے اعزاز میں سنجرانی ہائوس دائود آباد دالبندین میں پرتکلف ظہرانہ دیا گیا جس میں صحافی برادری نے بھی شرکت کی۔

دالبندین‎ شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments