سندھ کے شہر گھوٹکی میں محکمہ جیل کا پولیس اہلکار اپنے دو بچوں کو فروخت کرنے کے لیے ڈسٹرکٹ جیل کے گیٹ پر پہنچ گیا

ہفتہ 13 نومبر 2021 22:20

گھوٹکی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 13 نومبر2021ء) سندھ کے شہر گھوٹکی میں محکمہ جیل کا پولیس اہلکار اپنے دو بچوں کو فروخت کرنے کے لیے ڈسٹرکٹ جیل کے گیٹ پر پہنچ گیا۔تفصیلات کے مطابق سندھ کے شہر گھوٹکی میں محکمہ جیل کے پولیس اہلکار نے افسران کی مبینہ ناانصافی کے خلاف چیخ و پکار کی اور جیل کے گیٹ پر بچوں کو فروخت کرنے کے لیے آوازیں لگانا شروع کردیں۔

پولیس اہلکار نثار لاشاری کا نے کہا کہ جیل کے افسران کی زیادتیوں نے بچے فروخت کرنے پر مجبور کردیا۔

(جاری ہے)

پولیس اہلکار نے کہا کہ 17نومبر کو بچے کا گمبٹ کے اسپتال میں آپریشن ہے، چھٹی کے لیے رشوت مانگی گئی، ہیڈ محرر عزیز نے رشوت نہ دینے پر لاڑکانہ جیل تبادلہ کرادیا۔نثار لاشاری نے کہا کہ کوئی میرے بچے پچاس ہزار روپے میں خریدے تو افسران کو رشوت دے سکوں گا۔ پولیس اہلکار نے مزید کہا کہ ہیڈ محرر سے پندرہ دن کی چھٹی طلب کی گئی تو مجھ سے بیس ہزار روپے رشوت مانگی گئی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پولیس اہلکار کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے باوجود کسی افسران کی جانب سے اہلکار کی مدد نہیں کی گئی اور نہ ہی ہیڈ محرر کے خلاف کوئی ایکشن لیا گیا ہے۔

گھوٹکی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments