گائوں سچل لونڈ کے دو گھرانوں کے آٹھ بچے آنکھوں کے نور اور چلنے پھرنے سے معذور

منگل 12 اکتوبر 2021 21:40

میرپور ماتھیلو(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 12 اکتوبر2021ء) میرپور ماتھیلو کے شہر یارو لونڈ کے نواح میں واقع گائوں سچل لونڈ کے دو گھرانوں کے آٹھ بچے آنکھوں کے نور اور چلنے پھرنے سے معذور ، تفصیلات کے مطابق شہر یارو لونڈ کے نواح میں واقع گاں سچل لونڈ محمد ابرہیم اور شاہد گبول کے آٹھ کمسن بچے آنکھوں کے نور سے محروم ، جن میں تیرہ سالہ شکیلہ ، پانچ سالہ فوزیہ ، نو سالہ مرتضی، چھ سالہ شمن گبول ،دس سالہ نادر گبول ، آٹھ سالہ صابراں ، اور چھ سالہ امام علی ، غریب اور بے بس ہونے کی وجہ سے آنکھوں کی بینائی اپنی ٹانگیں گنوا بیٹھے ہیں ،معذور اور نابین بچوں کے ورثا محمد ابرہیم اور شاہد گبول نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ہمارے بچے پیدائشی طور پر معذور اور آنکھوں کے نور سے محروم نہیں ہیں، ہمارے بچے پیدا ہونے کے ایک سال بعد کمزوری کی وجہ سے آنکھوں میں موتیا آنا شروع ہوجاتا ہے اور دیکھتے ہی دیکھتے وہ آنکھوں کی بینائی سے محروم اور ٹانگوں سے معذور بن جاتے ہیں ہمارے پاس جو کچھ بھی تھا سب کچھ فروخت کر اپنے بچوں کے علاج کرایا مگر وہ ٹھیک نہ ہوسکے اور اب کھانے کیلئے بھی کچھ نہیں بچا ، متاثرین نے وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ، میر خالد احمد خان لونڈ ،میر بابر علی خان لونڈ ، صوبائی وزیر عبدالباری خان پتافی ،ڈی سی گھوٹکی اور انسانیت سے ہمدردی رکھنے والے افراد سے مطالبہ کیا کہ ہمارے بچوں کا علاج سرکاری اخراجات پر کرایا جائے تاکہ ہمارے بچے بھی ٹھیک ہوکر پڑھ لکھ کر مستقبل میں اچھی زندگی بسر کرسکیں۔

متعلقہ عنوان :

گھوٹکی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments