گلگت بلتستان کو آئینی دائرہ کار میں شامل کرائیں گے ، ترقی کا عمل مزید تیز ہوگا ، وزیر اطلاعات گلگت بلتستان

اظہار رائے کی آزادی ہر فرد کا حق ہے مگر اس حق کی آڑ لیکر خطے میں بے چینی اور نا اتفاقی کو فروغ دینا ہر گز کسی کو زیب نہیں دیتا، فتح اللہ خان

پیر 18 اکتوبر 2021 17:50

گلگت (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 18 اکتوبر2021ء) وزیر اطلاعات ، منصوبہ بندی و ترقیات گلگت بلتستان فتح اللہ خان نے کہا ہے کہ ہماری پارٹی گلگت بلتستان کو آئینی دائرہ کار میں شامل کرا کے رہے گی اور یہ گلگت بلتستان کی عوام کا ایک دیرینہ مطالبہ بھی ہے ۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان حکومت کا واضح نقطہ نظر اس خطے کی عوام کو انکا جائز اور قانونی حق دلانا ہے، ہم اس وعدے کے ساتھ الیکشن جیت کر آئے ہیں اور نہ صرف یہ وعدہ ایفا ہوگا بلکہ گلگت بلتستان کی خوشحالی اور بہتری کے لئے پی ٹی آئی کی وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی جانب ہر ممکن اقدام اٹھایا جائے گا۔

فتح اللہ خان نے کہا کہ اظہار رائے کی آزادی ہر فرد کا حق ہے مگر اس حق کی آڑ لیکر خطے میں بے چینی اور نا اتفاقی کو فروغ دینا ہر گز کسی کو زیب نہیں دیتا، عبوری آئینی صوبے کا بننا گلگت بلتستان کے تمام نفوس کے مفاد میں ہے۔

(جاری ہے)

عوامی ایکشن کمیٹی کی جانب سے کی جانے والی تنقید کا جواب دیتے ہوئے وزیر اطلاعات نے کہاکہ عبوری آئینی صوبے کا بننا ضروری ہے اور یہ خطہ ملکی وحدت اور اکائی کا ایک ناگزیر حصہ ہے۔

ہمارا پاکستان سے کلمہ طیبہ کا رشتہ ہے ، پاکستان سے ہی ہماری پہچان ہے اور گلگت بلتستان بلا شبہ پاکستان کے ماتھے کا جھومر ہے۔ عبوری صوبہ بننے اور مکمل شناخت ملنے کے بعد صوبے میں ترقی کا عمل مزید تیز ہوگا، وفاقی حکومت اس خطے کی جانب خصوصی توجہ مرکوز کئے ہوئے ہے۔ مختلف عناصر کی جانب سے بلاجواز تنقید کا مطلب واضح ہے کہ وہ کئی دہائیوں کے انتظار کے بعد اس خطے کو حاصل ہونے والی شناخت اور ترقی سے ناخوش ہیں۔

حالانکہ گلگت بلتستان کے ہر زی نفس اور باشعور شہری کی خواہش ہے کہ یہ خطہ پاکستان کے آئینی دائرہ کار کا باقاعدہ حصہ بنے ۔ وزیر اطلاعات فتح اللہ خان نے مزید کہا کہ صوبائی اسمبلی میں عوام کے منتخب کردہ نمائندے ہی بیٹھے ہوئے ہیں ، سیاچن کی وادیوں سے لیکر دیامر تک، غذر سے ہنزہ تک تمام اضلاع میں موجود باشعور عوام نے پی ٹی آئی پر مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے الیکشن میں ہماری پارٹی کو کامیابی دلائی ہے، ہمیں صوبائی اسمبلی میں عوام نے اپنیووٹ کی طاقت سے پہنچایا ہے اور اس مقدس ایوان میں عوام کی فلاح و بہبود کے لئے ہی قانون سازی ہوتی ہے۔

ماضی کی حکومتوں نے خطے کے مسائل کے دیرپا حل پر توجہ نہیں دی جس کا خمیازہ آج ہماری حکومت کو بھگتنا پڑ رہا ہے۔ گلگت بلتستان کے وزیر اطلاعات و منصوبہ بندی نے کہا کہ ہم مکمل عوامی مینڈیٹ لیکر آئے ہیں اور اس بات کا ادراک رکھتے ہیں کہ مختلف اضلاع میں پائے جانے والے مسائل بشمول بجلی کی کمیابی، روڈ انفراسٹرکچر کی بہتری، تعلیمی اصلاحات، آب پاشی اور پینے کے پانی کی فراہمی ، ٹرانسپورٹیشن کا معیاری نظام کی بہتری کے لئے اقدامات پر کام جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت کے تمام وزرا اور تمام معاونین خصوصی وزیر اعلی کی قیادت میں یکسو ئی سے اپنے اپنے حلقوں میں دیرپا و پائیدار ترقی کے لیئے کوشاں ہیں۔

گلگت شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments