گلگت بلتستان کابینہ نے ملازمتوں کیلئے عمر کی بالائی حد35 سال سے بڑھا کر 40 سال کرنے کی منظوری دے دی

بدھ 1 دسمبر 2021 00:10

گلگت (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 30 نومبر2021ء) گلگت بلتستان کی کابینہ نے گلگت بلتستان میں ملازمتوں کیلئے عمر کی بالائی حد35 سال سے بڑھا کر 40 سال کرنے کی باقاعدہ منظوری دے دی، اجلاس میں سکردو شہر میں سٹریٹ لائٹس لگانے کی منظوری ، گندم کی قیمت نہ بڑھانے کا فیصلہ کیاگیا۔ کابینہ اجلاس میں سکردو میں 8 میگاواٹ تھرمل بجلی پیدا کرنے کیلئے 8 دسمبر سے وہاں جنریٹر نصب کرنے کا بھی فیصلہ کیاگیا، بجلی کی قیمتیں بڑھانے پربھی غور کیا گیا اور فیصلہ کیا گیا کہ امیروں اور غریبوں کو بجلی کے الگ الگ بل بھجوائے جائیں گے، گلگت بلتستان میں تین میڈیکل کالجز بنانے کابھی فیصلہ کیاگیا۔

کابینہ اجلاس کے بعد کابینہ ارکان کے ہمراہ پریس بریفنگ دیتے ہوئے وزیراعلی خالد خورشید نے کہاہے کہ کابینہ اجلاس میں بڑے اور تاریخی فیصلے کئے گئے جن کے دورس نتائج سامنے آئیں گے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ملازمتوں کیلئے عمر کی بالائی حد 40 سال ہونے سے ہزاروں نوجوانوں کو فائدہ ہوگا اور بیروزگاری کے خاتمے میں مدد ملے گی۔ وزیر اعلی نے کہاکہ ہر جگہ قبضہ گروپ سرگرم ہیں، زمینوں پر اندھا دھند قبضہ کرنے والوں کو سزائیں دیں گے، اس کیلئے نیا قانون بنانا پڑا تو وہ بھی بنائیں گے ، بندر بانٹ میں محکمہ مال کا عملہ ملوث ہوا تو اسے بھی نہیں چھوڑیں گے۔

انہوں نے کہاکہ سکردو شہر میں بجلی بحران پر قابو پانے کیلئے 8 میگاواٹ کے جنریٹرز 8 دسمبر کو نصب ہوں گے جس کے بعد بحران ختم ہوگا ،سکردو کے شہریوں کو روزانہ 8 سے دس گھنٹے بجلی ملے گی۔ان کا کہنا تھا کہ ہم سکردو شہر کو خوبصورت بنانے کیلئے بڑے پیسے لگارہے ہیں، ہر جگہ پر سٹریٹ لائٹس لگیں گی، سکردو کو مثالی بنانا ہماری اولین ترجیح ہے۔ انہوں نے کہاکہ گلگت بلتستان میں دو سے تین نئے میڈیکل کالجز بنائے جائیں گے اور ان میں کلاسز بھی شروع کرکے دیں گے، ٹیکنیشن انسٹیٹیوٹ بھی بنایا جا رہا ہے، ہمارے ڈاکٹرز کو اب ان کی دہلیز پر ٹریننگ ملیگی۔

ان کا کہنا تھا کہ تعلیم ،صحت اور مواصلات کے شعبوں میں خصوصی اصلاحات لائی جارہی ہیں، صحت کے شعبے میں خصوصی کارڈز کے ذریعے لوگوں کو سات لاکھ روپے تک علاج معالجہ مفت فراہم کریں گے۔وزیر اعلی نے کہاکہ بلتستان کو چار راستوں کے ذریعے ملک سے منسلک کیا جا رہا ہے ،بابوسر ٹنل، چترال ایکسپروے کے علاوہ شغرتھنگ شاہراہ بھی بنائی جائیگی، سکردو ایئرپورٹ کو انٹر نیشنل کا درجہ دے دیا گیاہے ،اس کے توسیعی منصوبے کیلئے زمین بھی مقامی لوگوں کی خواہشات کے مطابق لیں گے،گلگت بلتستان کے نقشے کو بھی حتمی شکل دی جارہی ہے۔

گلگت شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments

>