گوجرانوالہ میں 12 سالہ بچے کی گمشدگی کا ڈراپ سین

12 سالہ احتشام کو زیادتی کے بعد قتل کیا گیا، ملزم نے اعتراف کر لیا

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین منگل 6 جولائی 2021 12:55

گوجرانوالہ میں 12 سالہ بچے کی گمشدگی کا ڈراپ سین
گوجرانوالہ (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 06 جولائی 2021ء) : گوجرانوالہ کے علاقہ تھانہ علی پورچٹھہ کے علاقہ گاؤں پنڈوری میں 12 سالہ احتشام کو زیادتی کے بعد قتل کیا گیا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق گوجرانوالہ میں 12 سالہ احتشام کی گمشدگی کا ڈراپ سین ہوگیا۔ گوجرانوالہ کے علاقہ تھانہ علی پورچٹھہ کے علاقہ گاؤں پنڈوری میں ندیم کا بیٹا احتشام 3 روزسے لاپتہ تھا۔

گھروالے احتشام کی تلاش کرتے رہے، لیکن جب طویل تلاش کے بعد احتشام نہ ملا تو اہل خانہ نے پولیس کو اطلاع دی۔ پولیس کے مطابق انہیں محلہ دارعبدالرحمن اوروسیم عباس پرشک تھا جس کی بنا پرانہیں حراست میں لیا گیا۔ گرفتاری کے بعد ملزمان نے زیادتی اورقتل کا اعتراف بھی کر لیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ بچے کوگھرسے اغواء کیا گیا تھا۔

(جاری ہے)

ملزمان نے زیادتی کے بعد احتشام کا گلا دبا کر اسے نہرمیں بہا دیا تھا۔

تاحال بچے کی لاش نہیں مل سکی۔ احتشام کے اہل خانہ نے ملزمان کو کڑی سے کڑی سزا دینے کا مطالبہ کیا ۔ واضح رہے کہ اس سے قبل بھی گوجرانوالہ میں ایک ایسا ہی واقعہ رپورٹ پوا تھا۔ صوبہ پنجاب کے ضلع گوجرانوالہ میں سبزی منڈی پولیس اسٹیشن کی حدود میں ایک 12 سالہ بچی کے ساتھ جنسی زیادتی کی گئی۔ پولیس کے مطابق ایک ملزم کی شناخت 22 سالہ گل شیر کے نام سے ہوئی ، جو پڑوس میں رہتا ہے ، جب اس کی بیٹی کو بچاتے ہوئے متاثرہ لڑکی کے والد نے اسے رنگے ہاتھوں پکڑ لیا تھا۔

اس اندوہناک واقعہ کو بیان کرتے ہوئے پولیس نے بتایا کہ متاثرہ لڑکی کے والد نے پڑوس کے ایک گھر سے اپنی بیٹی کی چیخیں سنیں اور بچے کو بچانے کے لئے اس میں داخل ہو گئیں۔ انہوں نے بتایا کہ ہم نے ملزم گل شیر کو گرفتار کر لیا ہے اور اس کے خلاف مقدمہ درج بھی کیا ہے۔   

متعلقہ عنوان :

گجرانوالہ شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments