13 سالہ طالبعلم زیادتی کے بعد قتل، والدہ نے خود کُشی کی دھمکی دے دی

اگر قاتلوں کو سزا نہ ملی تو میں خود پر تیل چھڑک کر اپنی جان دے دوں گی۔ مقتول کی والدہ

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین جمعہ 19 نومبر 2021 14:46

13 سالہ طالبعلم زیادتی کے بعد قتل، والدہ نے خود کُشی کی دھمکی دے دی
گوجرانوالہ (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 19 نومبر 2021ء) : گوجرانوالہ میں 13 سالہ طالبعلم کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کر دیا گیا، 13 سالہ بیٹے کی موت کی خبر سُن کر والدہ بھی غم سے نڈھال ہو گئیں اور خود کُشی کرنے کی دھمکی بھی دے دی۔ تفصیلات کے مطابق گوجرانوالہ میں نویں جماعت کے طالب علم کے بدفعلی اور قتل کو 24 روز گزر جانے کے باوجود منتظر ہیں کہ انہیں انصاف فراہم کیا جائے گا۔

گوجرانوالہ میں پسرور روڈ پر قاتلوں کی گرفتاری کے لیے کیے گئے احتجاج کے دوران مقتول کی والدہ نے خود کُشی کی دھمکی دے دی۔ بیٹے کی جُدائی کے غم میں نڈھال والدہ کا کہنا تھا کہ اگر قاتلوں کو سزا نہ ملی تو میں خود پر تیل چھڑک کر اپنی جان دے دوں گی۔ نویں جماعت کے طالبعلم کی والدہ نے کہا کہ میرے بیٹے کو گلی کا ایک لڑکا اغوا کرکے اپنے ساتھ لے گیا تھا اور اس کے دو دن کے بعد میرے بیٹے کی لاش برآمد ہوئی۔

(جاری ہے)

مقتول کی خالہ نے بتایا کہ ہم لوگ پوليس کے پاس چکر لگاتے ہیں لیکن کوئی بھی ہمارے ساتھ تعاون نہیں کر رہا۔ مقتول کی خالہ نے بھی انصاف کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ قاتلوں کو سر عام سزائے موت دی جانی چاہئیے۔ یاد رہے کہ یہ واقعہ 24 روز قبل تھانہ سیٹلائٹ ٹاؤن کے علاقہ سلیم کالونی میں پیش آیا جہاں نویں جماعت کے طالبعلم شازل کو اوباش نوجوانوں نے زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کر دیا تھا۔

ایک ماہ کے قریب عرصہ گزرنے کے بعد بھی پولیس مرکزی ملزمان کو گرفتار کرنے میں تاحال ناکام ہے۔ تیرہ سالہ لڑکے کی 25 اکتوبر کو اپرچناب نہر کے قریب سے لاش برآمد ہوئی۔ جس کا مقدمہ تھانہ سیٹلائٹ ٹاؤن میں درج کروایا گیا تھا۔ گذشتہ روز قتول کی ماں بہنوں سمیت اہل علاقہ کی بڑی تعداد نے تھانہ سیٹلائٹ ٹاؤن پولیس کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے شدید نعرے بازی بھی کی۔ دوسری جانب پولیس کا کہنا ہے کہ زیر حراست 3 ملزمان سے تفتیش جاری ہے جبکہ فرانزک رپورٹ کے بعد مزید کارروائی کی جائے گی۔

گجرانوالہ شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments