گوجرانوالہ،رواں برس بھی پہلوان جدید سہولیات سے محروم، اکھاڑوں کی تعداد بھی کم ہونے لگی

منگل 28 دسمبر 2021 14:39

گوجرانوالہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 28 دسمبر2021ء) پوری دنیا میں پاکستان کا نام روشن کرنے اور نئے ریکارڈ قائم کرنے والے گوجرانوالہ کے پہلوان سال 2021 میں بھی جدید دور کے مطابق سہولیات سے محروم رہے، حکومتی عدم توجہی کے باعث اکھاڑوں کی تعداد بھی کم ہونے لگی۔

(جاری ہے)

گوجرانوالہ کے پہلوانوں نے اپنی مدد آپ کے تحت ٹریننگ کر کے وطن عزیز کے لیے کامن ویلتھ اور سیف گیمز میں نو گولڈ میڈل جیتے جبکہ رستم پاکستان سمیت چارمرتبہ ورلڈ چمپئن بننے کا اعزاز بھی حاصل کیا تاہم افسوس حکومت کی جانب سے پہلوانوں کی کوئی حوصلہ افزائی نہ ہو سکی اور وعدوں کے باجود گوجرانوالہ میں ریسلنگ اکیڈمی کا قیام عمل میں نہ لایا جا سکا۔

حکومت کی عدم توجہی کے باعث گوجرانوالہ میں اکھاڑوں کی تعداد 20سے کم ہو کر پانچ رہ گئی ہے اس کے باوجود نیشنل ریسلنگ چمہئین شپ میں دس ویٹ کیٹیگری کے مقابلوں میں سے 9 گولڈ میڈل گوجرانوالہ کے پہلوانوں نے جیتے ہیں۔

متعلقہ عنوان :

گجرانوالہ شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments