ایچ ڈی اے ایمپلائز یونین کا 25 جنوری سے ڈائریکٹر جنرل ایچ ڈی اے کے آفس پر واسا ملازمین مسائل کے حل کئے دھرنا دینے کااعلان

اتوار 23 جنوری 2022 21:35

حیدرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 23 جنوری2022ء) ایچ ڈی اے شعبہ واسا کے ریگولر ورک چارج کنٹریکٹ ملازمین اور ریٹائرڈ ملازمین کی 12 ماہ کی تنخواہوں /پنشن ادا نہ کرنے اور ورک چارج کنٹرکٹ ملازمین کو ریگولر نہ کرنے اور حکومتِ سندھ کے کم از کم اجرت کے قانون پر عمل نہ کرنے کے خلاف ایچ ڈی اے ایمپلائز یونین (سی بی ای) 25 جنوری سے ڈائریکٹر جنرل ایچ ڈی اے کے آفس پر واسا ملازمین مسائل کے حل کئے دھرنا دے گی۔

(جاری ہے)

اس سلسلے میں ایچ ڈی اے ایمپلائز یونین کے عہدیداروں نے حیدرآباد کے مختلف پمپنگ اسٹیشنوں پر ملازمین سے ملاقات کی اور کہا کہ ایچ ڈی اے ایمپلائز یونین نے HDAانتظامیہ اور حکومت سندھ کے تمام متعلقہ افسرانِ اعلی کو HDAشعبہ واسا کے مسائل کو مستقل بنیادوں پر حل کرنے کی طرف توجہ دلائی مگر افسوس سوائے تسلیاں اور دلاسے دینے کے علاوہ عملا آج تک کوئی اقدام نہیں اٹھایا جارہا جبکہ HDAشعبہ واسا کے ملازمین انتہائی شدید مالی بحران میں مبتلا ہونے کی وجہ سے بھوک و افلاس تنگ دستی کی زندگی گزار رہے ہیں جسکی سب سے بڑی وجہ حکومتِ سندھ کے حیدرآباد میں موجود سرکاری ادارے ہیں جو کہ HDAواسا کے فراہمی آب کے ماہانہ 4کروڑ ادا نہیں کر تے جبکہ شعبہ واسا کے ملازمین کی تنخواہ /پنشن اور دیگر واجبات کی ادائیگی کے لیے 2ماہ سے زیادہ عرصے سے 74 کروڑ روپے کی سمری حکومتِ سندھ کی منظوری کی منتظر ہے مگر افسوس کہ ابھی تک سمری کو منظور نہیں کیا جارہا ہے جس کی وجہ س واسا ملازمین اور انکے اہلِ خانہ فاقہ کشی کی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں اور اب صبر کا پیمانہ لبریز ہوچکا ہے اور ایچ ڈی اے واسا ملازمین احتجاج کرنے پر مجبور ہیں۔

حیدرآباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments