واسا نے حیدرآباد میں پینے کے پانی کا مصنوعی بحران پیدا کر کے شہریوں کی چیخیں نکال دی ہیں،قائم مقام مئیر حیدرآباد

منگل اپریل 18:56

حیدر آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 23 اپریل2019ء) قائم مقام مئیر حیدرآباد سید سہیل مشہدی نے اس امر پر تشویش کا اظہار کیا کہ ایچ ڈی اے کے ذیلی ادارے واسا نے حیدرآباد میں پینے کے پانی کا مصنوعی بحران پیدا کر کے شہریوں کی چیخیں نکال دی ہیں۔

(جاری ہے)

واسا جو کہ اپنے فرائیص انجام دنے میں ناکام رہا ہے جس کی غفلت اور اپنے فرائض سے چشم پوشی کے سبب آج تک پانی کی وافر مقدار میں فراہمی شہریوں کے لئے اس گرمی کے موسم میں ایک خواب بنکر رہ گئی ہے، ماضی میں حیدرآباد میں صبح شام دو وقت میں پانی فراہم کیا جاتا تھا جو کہ اب پانی کا شیڈول بگڑ گیا ہے شام اوررات میں پانی فراہم کیا جاتا ہے وہ بھی 20منٹ سے آدھے گھنٹے جو کہ شہریوں کے لئے نا کافی ہے جس کے سبب لوگ پینے کہ پانی کا زخیرہ بھی نہیں کرسکتے کیونکہ گرمی میں پانی کا استعمال بڑھ جاتا ہے اس صورتحال میں لو گوں کو پانی کی عدم فراہمی واسا کے لئے ایک سوالیہ نشان بنی ہوئے ہے شہر کی ہر یوسی سے یہ شکایت موصول ہورہی ہے کہ شہر میں پانی کی قلت پیدا کردی گئی ہے ایک ایسے وقت کہ جب رمضان مبارک کی آمد آمد ہے ۔

ضرورت اس بات کی ہے واسا لوگوں کی ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے اپنی کار ردگی کو بہتر بنائے کہ یہ وقت کی ہم ضرورت ہے۔

متعلقہ عنوان :

حیدرآباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments