اُردو پوائنٹ پاکستان اسلام آباداسلام آباد کی خبریںمدارس اور عصری اداروں کے مابین ہم آہنگی کے معاشرہ میں مثبت نتائج برآمد ..

مدارس اور عصری اداروں کے مابین ہم آہنگی کے معاشرہ میں مثبت نتائج برآمد ہو سکتے ہیں

ریکٹر بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی کا تقریب سے خطاب

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 فروری2017ء) ریکٹر بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اسلام آباد ڈاکٹر معصوم یٰسین زئی نے مدارس اور عصری اداروں کے مابین ہم آہنگی پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس عمل سے معاشرہ میں مثبت نتائج برآمد ہو سکتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جامعہ کے فیصل مسجد کیمپس میں اقبال بین الاقوامی ادارہ برائے تحقیق و مکالمہ کے زیر اہتما دینی مدارس کے اساتذہ کے لئے یونیورسٹی سرٹیفکیٹ پروگرام کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ مدارس معاشرے میں کلیدی حیثیت رکھتے ہیں کیونکہ انہی کے ذریعے افراد اسلامی تعلیمات سے روشناس ہوتے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ جامعات اور مدارس کے باہمی تعاون و روابط سے ایک تعمیری معاشرے قائم کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔

(خبر جاری ہے)

ڈاکٹر معصوم نے اس بات پر زور دیا کہ مدارس کے طلباء کو رائج تعلیمی نظام میں نمائندگی دی جانے کی ضرورت ہے۔

خواتین کی تعلیم پر بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ پر امن و خوشحال معاشرے کی تشکیل کے لئے خواتین کی تعلیم اہم ہے کیونکہ تعلیم یافتہ عورت پورے خاندان کی تقدیر بدل دیتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اسلامی یونیورسٹی عرصہ دراز سے مذہبی و مسلکی ہم آہنگی، دینی تربیت کے پروگراموںکا انعقاد کر رہی ہے اور ان میں سے کئی پروگرام اقبال بین الاقوامی ادارہ برائے تحقیق و مکالمہ کے زیر اہتمام منعقد ہوئے جو قابل ستائش ہیں۔ تقریب میں ادارے کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر حسن الامین ، مہتمم مدرسہ دارالعلوم ڈاکٹر تاج محمد اور ادارے کے دیگر متعلقہ افسران نے بھی شرکت کی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

اسلام آباد شہر کی مزید خبریں