تعلیم کی تڑپ رکھنے والے طلبہ کے لئے دروازے کھلے ہیں ،ْ ڈاکٹر شاہدصدیقی

غریب ،ْ مستحق اور ضرورت مند طلباء و طالبات کو سکالرشپ اور فیس میں رعائیت فراہم کرنے کیلئے سالانہ بجٹ میں 170ملین روپے مختص کردئیے ہیں ،ْ وائس چانسلر اوپن یونیورسٹی

منگل اپریل 15:50

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 اپریل2018ء) علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی میں سمسٹر بہار 2018کے داخلوں کے سلسلے میں "اوپن ڈی"تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر ،ْ پروفیسر ڈاکٹر شاہد صدیقی نے کہا کہ یونیورسٹی کو جدید خطوط پر استوار کرنے کے لئے مختلف اقدامات کئے گئے ہیں ،ْ یہی وجہ ہے کہ لوگوں کا اوپن یونیورسٹی پر اعتماد تیزی سے بڑھ رہا ہے جس کے نتیجے میں داخلوں کی تعداد میں تاریخی اضافہ ہورہا ہے۔

انہوںنے کہا کہ یونیورسٹی کے طلبہ کی تعداد 13۔لاکھ سالانہ سے تجاوز کرچکی ہے ،ْ یہ تعداد ملک کی تمام پبلک سیکٹر یونیورسٹیوں میں پڑھنے والے طلبہ کی مجموعی تعد ادسے زیادہ ہے۔انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی کے 13۔لاکھ طلبہ میں 56۔فیصد خواتین شامل ہیں جو ہمارے لئے باعث فخر ہے۔

(جاری ہے)

ڈاکٹر شاہد صدیقی نے مزید کہا ہے کہ بحیثیت ایک میگا یونیورسٹی ،ْ پاکستان کے ہر طبقے سے تعلق رکھنے والے افراد کو مساوی تعلیمی سہولیات فراہم کرنا ،ْ غریب اورمستحق افراد کو تعلیمی نیٹ میں لانے کو اوپن یونیورسٹی اپنی قومی ذمہ داری سمجھتی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی نے ملک بھر میں موجود غریب ،ْ مستحق اور ضرورت مند طلباء و طالبات کو سکالرشپ اور فیس میں رعائیت فراہم کرنے کے لئے اپنے سالانہ بجٹ میں 170۔ملین روپے مختص کردئیے ہیں ،ْ اس کا بنیادی مقصد زیادہ سے زیادہ لوگوں کو تعلیمی نیٹ میں لانا ہے اور کوشش ہے کہ علم حاصل کرنے کا ایک بھی خواہشمند محض داخلہ فیس نہ ہونے کی وجہ سے تعلیم حاصل کرنے سے محروم نہ رہے۔

انہوں نے کہا کہ رواں سمسٹر سے یونیورسٹی نے فاٹا اور بلوچستان کے طلبہ کے لئے میٹرک کی تعلیم مفت کردی ہے۔معذور افراد ،ْ جیلوں میں مقید افراد اور خواجہ سرائوں کو مرکزی دھارے میں شامل کرنے کے لئے بھی مفت تعلیمی منصوبے متعارف کئے ہیں۔ڈاکٹر شاہد صدیقی نے کہا کہ ترقی کی منزلیں تعلیم سے جڑی ہیں ،ْ ترقی یافتہ ممالک کی صف میں شامل ہونے کے لئے ہمیں بامعنی ریسرچ اور معیاری تعلیم پر توجہ مبذول کرنا ہوگی۔

ڈاکٹر شاہد صدیقی نے کہا کہ حقیقی تعلیم یہ ہے کہ نئی نسل کو تحقیق و تخلیق کی جانب راغب کیا جائے تاکہ وہ سماجی۔اقصادی ترقی میں کردار ادا کرسکیں۔اوپن ڈے میں مقامی سکولز اور کالجز کے سینکڑوں طلبہ و طالبات نے یونیورسٹی کے تمام شعبہ جات کے سٹالز کا دورہ کیا اور یونیورسٹی کے تعلیمی پروگرامز میں گہری دلچسپی ظاہر کی اور مختلف تعلیمی پروگرامز کے پراسپکٹسس حاصل کئے۔

اوپن ڈے کا اہتمام ڈائریکٹوریٹ آف سٹوڈنٹس ایڈوائزری اینڈ کونسلنگ سروسز نے شعبہ داخلہ ،ْ ڈائریکٹر ریجنل سروسسز ،ْ اسلام آباد اور راولپنڈی کے علاقائی دفاتر کے تعاون سے کیاتھا۔تقریب سے یونیورسٹی کے چاروں ڈین جن میں ڈین فیکلٹی آف ایجوکیشن ،ْ پروفیسر ڈاکٹر ناصر محمود ،ْ ڈین فیکلٹی آف سائنس ،ْ پروفیسر ڈاکٹر سید ظفر الیاس ،ْ ڈین فیکلٹی آف سوشل سائنسسز ،ْ پروفیسر ڈاکٹر ثمینہ اعوان اور ڈین فیکلٹی آف کلیہ عربی و علوم اسلامیہ ،ْ پروفیسر ڈاکٹر محی الدین ہاشمی شامل تھے نے اپنے اپنے فیکلٹیوں کا تعارف اور پیش کئے جانے والے تعلیمی پروگرامز کی تفصیلات بیان کئے۔

ڈائریکٹر ریجنل سروسسز ،ْ ڈاکٹر عارف سلیم عارف نے یونیورسٹی کے ملک گیر ریجنل نیٹ ورک کی تفصیلات بیان کرتے ہوے کہا کہ یہ پاکستان کی واحد یونیورسٹی ہے جو اپنے طلبہ کو تمام تعلیمی سہولتیں اُن کے دہلیز پر فراہم کرتی ہے۔اوپن ڈے کے اختتامی تقریب میں لکی ڈرا کا اہتمام کیا گیا جن میں تین خوش نصیب طلبہ کا نام نکلنے پر اُن طلبہ کے موجودہ سمسٹر کا داخلہ فیس معاف کردیا گیا۔

اس موقع پر پچھلے سمسٹر یعنی سمسٹر خزاں 2017ء کے اوپن ڈے کے موقع پر منعقدہ لکی ڈراکے تین خوش نصیب طلبہ کو فیس واپسی کے چیک دئیے گئے۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے رانا طارق جاویدنے کہا کہ ڈاکٹر شاہد صدیقی نے وائس چانسلر کا عہدہ سنبھالتے ہی یونیورسٹی میں اوپن ڈے تقاریب کا کلچر متعارف کیا تھا اور اس جانب ان کی خصوصی توجہ کی وجہ سے تسلسل سے ہر سمسٹر کے داخلوں کے دوران ملک کے 44۔شہروں میں موجود یونیورسٹی کے علاقائی دفاتر میںاوپن ڈے تقاریب منعقد ہورہی ہیں ،ْ نتیجے میں یونیورسٹی کا پیغام گھر گھر پہنچ رہا ہے اور داخلوں کی تعداد میں ریکارڈ اضافے کا کریڈیٹ ڈاکٹر شاہد صدیقی کو جاتا ہے۔

متعلقہ عنوان :

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments