اُردو پوائنٹ پاکستان اسلام آباداسلام آباد کی خبریںسعودی عرب نے وزیراعظم عمران خان کا تاریخی استقبال کرنے کی تیاریاں مکمل ..

سعودی عرب نے وزیراعظم عمران خان کا تاریخی استقبال کرنے کی تیاریاں مکمل کرلی

سعودی عرب کے دارلحکومت ریاض کو پاکستان پرچوں سے سجا دیا گیا،اہم شاہراہوں اور چوراہوں پر سعودی عرب اور پاکستان کے پرچم ایک ساتھ لہرا دئیے گئے

ریاض(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار- 18ستمبر 2018ء ):
سعودی عرب کے دارلحکومت ریاض کو پاکستان پرچوں سے سجا دیا گیا،اہم شاہراہوں اور چوراہوں پر سعودی عرب اور پاکستان کے پرچم ایک ساتھ لہرا دئیے گئے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان اور سعودی عرب کے برادرانہ اسلامی تعلقات کسی سے ڈھکے چھپے نہیں ہیں ۔سعودی عرب نے ہر مشکل حالت میں پاکستان کا نہ صرف ساتھ دیا بلکہ عملی اقدامات بھی کئیے ہیں۔

دوسری جانب پاکستان نے بھی ہر عالمی اور علاقائی معاملے پر سعودی حکومت کا ساتھ دیا ہے۔تاہم یمن فوجیں بھیجنے سے انکار پر برادار اسلامی ملک اور پاکستان میں معمولی خفگی پیدا ہو گئی تھی جس کے بعد سعودی حکومت پاکستان سے کچھ کھنچی کھنچی نظر آتی تھی۔ تا ہم پاکستان اور سعودی عرب کے تعلقات ابھی بھی مثالی ہیں لیکن کچھ عرصے سے سعودی حکام کا جھکاو پاکستان کی جانب نہیں ہے۔

(خبر جاری ہے)

تاہم جب سے تحریک انصاف کی حکومت قائم ہوئی ہے ،پاکستان اورسعودی عرب میں نئے تعلقات کا آغاز ہونے جارہا ہے۔اسی ضمن میں وزیر اعظم عمران خان نے اپنا پہلا غیرملکی دورہ کرنے کے لیے سعودی عرب کا انتخاب کیا۔وزیر اعظم آج سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے سرکاری دورے پر روانہ ہوچکے ہیں۔وزیراعظم آج 2 روزہ دورےکےپہلےمرحلےپرسعودی عرب روانہ ہوئے ہیں۔

اس دورے میں خارجہ اورخزانہ کےوفاقی وزرا،مشیرتجارت وزیراعظم کےہمراہ ہیں۔دوسری جانب سعودی عرب نے وزیر عظم عمران خان کا تاریخی استقبال کرنے کی تیاریاں مکمل کرلی
سعودی عرب کے دارلحکومت ریاض کو پاکستان پرچوں سے سجا دیا گیا،اہم شاہراہوں اور چوراہوں پر سعودی عرب اور پاکستان کے پرچم ایک ساتھ لہرا دئیے گئے۔اس موقع پر وزیراعظم عمران خان سعودی فرمانروا،ولی عہد سے الگ الگ ملاقاتیں کرینگے۔

سعودی فرمانرواوزیراعظم کےاعزازمیں شاہی محل میں ضیافت بھی دینگے۔وزیراعظم کےہمراہ جانیوالےوزرااپنےسعودی ہم منصب سے ملاقاتیں کرینگے۔اس موقع پر پاکستان اور سعودی عرب میں دفاعی اور معاشی حوالے سے اہم معاہدے ہونے کی امید ظاہر کی جارہی ہے۔وزیر اعظم کا دورہ کامیاب ہونے کی صورت میں پاکستان کو خاطر خواہ فائدہ ہوگا۔اس موقع پر وزیراعظم مدینہ منورہ میں زیارت ، عمرہ کی سعادت حاصل کرینگے۔وزیراعظم سےاوآئی سی کےسیکریٹری جنرل ڈاکٹریوسف بن احمدبھی ملاقات کرینگے۔ یاد رہے کہ وزیر اعظم بنتے ہی سعودی فرمانروا اور سعودی ولی عہد کی جانب سے وزیر اعظم عمران خان کو دورے کی دعوت دی گئی تھی۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

اسلام آباد شہر کی مزید خبریں