اُردو پوائنٹ پاکستان اسلام آباداسلام آباد کی خبریںسزا معطلی کے فیصلے کے بعد نواز شریف کا رد عمل بھی سامنے آ گیا مجھے معلوم ..

سزا معطلی کے فیصلے کے بعد نواز شریف کا رد عمل بھی سامنے آ گیا

مجھے معلوم تھا کہ میں بے گناہ ہوں میں نے کوئی غلط کام نہیں کیا،میراضمیر مطمئن تھا اللہ حق اورانصاف کاساتھ دیتا ہے۔ نواز شریف کی اڈیالہ جیل میں ن لیگی رہنماؤں سے گفتگو

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 19 ستمبر 2018ء) : سزا معطلی کے فیصلے کے بعد نواز شریف کا رد عمل بھی سامنے آ گیا ۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق وزیراعظم نواز شریف ، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر) صفدر کی سزا معطل کرتے ہوئے ان کی رہائی کا حکم دےدیا ہے۔اسلام آباد ہائیکورٹ میں فیصلے کے وقت پارٹی صدر شہباز شریف ، پارٹی کے مرکزی رہنما اور پارٹی کارکنان بھی موجود تھے۔

جس کے بعد اڈیالہ جیل میں نوازشریف سے شہبازشریف اورن لیگی رہنماؤں کی ملاقات ہوئی ہے۔نوازشریف سےشہبازشریف کی ملاقات سپرنٹنڈنٹ اڈیالہ جیل کےدفترمیں ہوئی۔ملاقات کےدوران مرتضیٰ جاویدعباسی،چودھری تنویر،سردارمہتاب بھی موجود تھے۔اس موقع پر نوازشریف کا کہنا تھا کہ مجھے معلوم تھا کہ میں بے گناہ ہوں۔

(خبر جاری ہے)

میں نےکوئی غلط کام نہیں کیا،میراضمیر مطمئن تھا،اللہ حق اورانصاف کاساتھ دیتا ہے۔

یاد رہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف ،مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کو ایون فیلڈ ریفرنس کیس میں نیب عدالت نے سزا دی تھی جس کے تحت سابق وزیراعظم نواز شریف کو 11 اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کو 8 جب کہ داماد کیپٹن (ر) صفدر کو ایک سال قید کی سزا سنائی گئی۔ احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے فیصلے میں نوازشریف کو 80 لاکھ پاؤنڈ اور مریم نواز کو 20 لاکھ پاؤنڈ جُرمانہ بھی عائد کیا اور ایون فیلڈ اپارٹمنٹس کو ضبط کرنے کا بھی حکم دیا جب کہ عدالت نے کیپٹن (ر) صفدر پرکوئی جُرمانہ عائد نہیں کیا۔

تینوں مجرموں نے سزاؤں کے خلاف اسلام آباد ہائیکورٹ میں اپیلیں دائر کیں، جن کوسماعت کے لیے منظور کرتے ہوئے اسلام آباد ہائیکورٹ نے آج تینوں مجرموں کی سزا معطل کرنے اور انہیں رہا کرنے کا حکم دیا۔ جبکہ تینوں قیدیوں کو 5،5 لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے بھی جمع کروانے کا حکم دیا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں -

اسلام آباد شہر کی مزید خبریں