نواز شریف نے حکومت کو ٹف ٹائم دینے کے لئے پیپلزپارٹی سے مدد مانگ لی

العزیزیہ ریفرنس کی سماعت میں نوازشریف کی حاضری سے استثنیٰ کی در خواست منظور

Mian Nadeem میاں محمد ندیم پیر ستمبر 13:54

نواز شریف نے حکومت کو ٹف ٹائم دینے کے لئے پیپلزپارٹی سے مدد مانگ لی
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔24 ستمبر۔2018ء) احتساب عدالت میں العزیزیہ ریفرنس کی سماعت جاری ہے،سابق وزیراعظم نوازشریف عدالت میں پیش نہیں ہوئے ان کے وکیل کی جانب سے حاضری سے استثنیٰ کی در خواست پیش کی گئی ،عدالت نے استثنیٰ کی در خواست جزوی طور پر منظور کر لی ہے.

(جاری ہے)

احتساب عدالت میں العزیزیہ ریفرنس کیس کی سماعت جج محمد ارشد ملک کیس کی سماعت کر رہے ہیں،سابق وزیراعظم نوازشریف اہلیہ کی وفات کی وجہ سے عدالت میں پیش نہیں ہوئے،ان کے وکیل خواجہ حارث نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ نواز شریف کی اہلیہ بیگم کلثوم نواز کا انتقال ہوگیا ہے ، نوازشریف بڑے صدمے میںہیں ،انہیں سنبھلنے کیلئے وقت درکار ہے ،عدالت سے استدعا ہے کہ انہیں 5 روز کا استثنیٰ دیا جائے.

احتساب عدالت نے پانچ روز کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست جزوی طور پر منظور کرتے ہوئے 3 دن کا استثنیٰ دیدیا. دوسری جانب نواز شریف نے حکومت کو ٹف ٹائم دینے کے لئے سابق صدر آصف علی زرداری سے مدد مانگ لی. ذرائع کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ حکومت کو ٹف ٹائم دینے کے لئے مسلم لیگ (ن) متحرک ہوگئی ہے اور اس سلسلے میں (ن) لیگ کے قائد نواز شریف نے پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری سے مدد مانگ لی ہے.

متحدہ اپوزیشن کے لئے مسلم لیگ (ن) نے پیپلز پارٹی سے رابطہ کیا اور اس حوالے سے راجہ ظفرالحق کی سربراہی میں (ن) لیگ کے وفد نے پیپلز پارٹی کے رہنما نیئر حسین بخاری سے اہم ملاقات کی اور نواز شریف کا پیغام پہنچایا جب کہ ضمنی انتخابات میں مشترکہ امیدوار لانے کی بھی درخواست کی. ذرائع کے مطابق راجہ ظفرالحق کا کہنا ہے کہ مشترکہ حکمت عملی کے تحت موجودہ حکومت کو ٹف ٹائم دیا جا سکتا ہے، متحدہ اپوزیشن کے لئے پیپلز پارٹی (ن) لیگ کا ساتھ دے، متحدہ اپوزیشن کے تحت پارلیمنٹ کے اندر اور باہر موثر انداز میں آواز بلند کی جا سکتی ہے.

پیپلز پارٹی کے راہنما نیئر حسین بخاری نے راجہ ظفر الحق کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کا موقف پارٹی قیادت تک پہنچاﺅں گا، پارٹی قیادت سے مشاورت کے بعد جواب دیا جا سکتا ہے، پیپلزپارٹی کا جمہوریت کی مضبوطی اور تسلسل کے لیے کردار تاریخی ہے جب کہ بلاول بھٹو کی قیادت میں پیپلز پارٹی پارلیمنٹ میں مدبرانہ کردار ادا کر رہی ہے. نیئر حسین بخاری نے کہا کہ ضمنی انتخابات میں مشترکہ امیدوار لانے سے متعلق جلد آگاہ کروں گا جبکہ جس پارٹی کا امیدوار رنر اپ ہے وہی امیدوار ہونا چاہیے.

اس موقع پر راجہ ظفر الحق نے کہاکہ مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی کے درمیان رابطے مزید بڑھیں گے، شہباز شریف آج اسلام آباد پہنچ رہے ہیں جبکہ میاں نواز شریف کو بھی آپ سے ملاقات کی تفصیل دوں گا. ملاقات میں پارلیمنٹ میں اپوزیشن کا کرداراورضمنی انتخابات میں مشترکہ امیدوارلانے پربھی تبادلہ خیال کیاگیا.

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments