امریکہ میں مقیم سرمایہ کاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی طرف راغب کرنے اور سہولتیں دینے کیلئے ہر ممکن تعاون کیا جائے گا،

امریکہ کے ساتھ تعلقات کو اہمیت دیتے ہیں تاہم ان تعلقات کو برابری کی سطح پر ہموار کرنا چاہتے ہیں سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کا راولپنڈی چیمبر آف کامرس کے زیر اہتمام پہلے پاکستان امریکہ بزنس سمٹ سے خطاب

پیر ستمبر 20:14

امریکہ میں مقیم سرمایہ کاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی طرف راغب ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 ستمبر2018ء) سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ امریکہ میں مقیم سرمایہ کاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی طرف راغب کرنے اور سہولتیں دینے کیلئے ہر ممکن تعاون کیا جائے گا، امریکہ کے ساتھ تعلقات کو اہمیت دیتے ہیں تاہم ان تعلقات کو برابری کی سطح پر ہموار کرنا چاہتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے یہاں راولپنڈی چیمبر آف کامرس کے زیر اہتمام پہلے پاکستان امریکہ بزنس سمٹ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

سپیکر قومی اسمبلی نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کے وژ ن کے مطابق ملک میں تجارتی سرگرمیوں کے فروغ اور اقتصادی روابط بڑھانے کیلئے تمام تر کوشیش کی جائیں گی۔ پاک۔امریکہ بزنس سمٹ کے انعقاد کیلئے راولپنڈی چیمبر اور پاک امریکہ بزنس فورم کی کاوش قابل ستائش ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ کاروباری برادری اہم شراکت دار ہے، معاشی پالیسی کی تشکیل کیلئے ان کی رائے لی جائے گی۔

انہوں نے یقین دلایا کہ وزیر خزانہ اور مشیر خزانہ جلد ہی چیمبر آف کامرس کے نمائندوں کے ساتھ ملاقات کریں گے اور ان کی تجاویز کو شامل کریں گے۔ سپیکر قومی اسمبلی نے کہا کہ قومی خوشحالی اور دیرپا ترقی کا انحصار حکومتوں کے شانہ بشانہ کام کرنے والی کاروباری بر ادری پر ہوتا ہے پاکستان کی کاروباری برادری نے سماجی، اقتصادی اور قومی خوشحالی میں ہمیشہ اہم کردار ادا کیا ہے، تمام چیلنجوں اور قومی مسائل پر مل جل کر قابو پایا جا سکتا ہے۔

امریکن بزنس کمیونٹی پاکستان میں بلاخوف و خطر سرمایہ کاری کرے انہیں ہرقسم کا تحفظ دیا جائے گا، سی پیک سے پاکستان اور پورے خطہ میں ترقی کی نئی راہیں کھلیں گی، نجی شعبہ آگے آئے۔ اس موقع پر وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی نے اپنے خطاب میں کہا کہ معاشی ترقی کیلئے ضروری ہے کہ ملک میں امن ہو تاجر برادری خاص طور پر بیرون ملک مقیم پاکستانیو ں کو سرمایہ کاری کیلئے ہر ممکن تعاون اور تحفظ فراہم کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے اور ہم اسے احسن طریقے سے نبھائیں گے، اوورسیز پاکستانیوں کا پاکستان کی اقتصادی ترقی میں اہم کردار ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اور امریکہ کے تعلقات باہمی احترام اور باہمی انحصار پر مبنی ہیں ہمیں امن کیلئے مل کر کام کرنا ہو گا اور پاکستان کا تشخص بہتر بنانا ہو گا‘ غلط تصورات کو ختم کرنا ہو گا، ہم دہشت گردی کے خلاف ایک بڑی جنگ لڑ رہے ہیں، قومی سلامتی و دفاع پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ سمٹ سے سینیٹر اعظم سواتی نے بھی خطاب کیا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستانی محنتی ہیں اور پاکستان میں سرمایہ کاروں کیلئے وسیع مواقع دستیاب ہیں۔ قبل ازیں صدر چیمبر زاہد لطیف خان نے کہا کہ بزنس سمٹ کا مقصد پاکستان اور امریکہ کے درمیان تجارتی روابط کے فروغ، وفود کی سطح پر تبادلوں، تجارتی نمائشوں اور میلوں کے انعقاد سمیت مختلف شعبوں میں تجارت کے فروغ میں حائل رکاوٹوں کی نشاندہی اور حل پر تبادلہ خیال کرنا تھا امریکہ اور پاکستان کے درمیان تجارتی تعلقات بہتر بنانے کیلئے ضروری ہے کہ وفود کی سطح پر تبادلہ کیا جائے اور نمائشوں اور میلوں کا اہتمام کیا جائے۔

اس موقع پر راولپنڈی چیمبر اور پاک امریکہ بزنس فورم کے درمیان ایک ایم او یو پر بھی دستخط کیے گئے ۔ سمٹ میں امریکہ کے شہر ڈیلیس سے تجارتی وفد سمیت امریکی سفارتخانہ کے کمرشل قونصلر، مختلف چیمبرز کے صدور، راولپنڈی چیمبر کے عہدیداران، تاجر برادری کے نمائندے اور بزنس کمیونٹی کی ممتاز شخصیات نے بھی شرکت کی۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments