حضور نبی کریمؐ کا پیغام رحمت تمام مذاہب، تمام ادیان اور ساری مخلوقات کیلئے ہے ،دنیا تک پہنچانے میں میڈیا ہماری مدد کرے،ڈاکٹر نور الحق قادری

حضور نبی کریمؐ کی شان میں گستانی سے تصادم کی کیفیت پیدا ہوتی ہے، جس سے بچنے کیلئے تمام اکائیوں کو ساتھ ملا کر رواداری اور مساوات پر مبنی اقدامات اٹھائینگے،وزیر مذہبی کی پریس کانفرنس

جمعہ نومبر 21:02

حضور نبی کریمؐ کا پیغام رحمت تمام مذاہب، تمام ادیان اور ساری مخلوقات ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 نومبر2018ء) وفاقی وزیر مذہبی امور ڈاکٹر نور الحق قادری نے کہا ہے کہ حضور نبی کریمؐ کا پیغام رحمت تمام مذاہب، تمام ادیان اور ساری مخلوقات کیلئے ہے اسے دنیا تک پہنچانے میں ذرائع ابلاغ ہماری مدد کرے، اس حوالے سے مذہبی سفارتکاری سمیت تمام راستے اختیار کئے جائینگے، حضور نبی کریمؐ کی شان میں گستانی سے تصادم کی کیفیت پیدا ہوتی ہے، جس سے بچنے کیلئے تمام اکائیوں کو ساتھ ملا کر رواداری اور مساوات پر مبنی اقدامات اٹھائینگے۔

جمعہ کو وزارت مذہبی امور میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر مذہبی امور ڈاکٹر نور الحق قادری نے کہا کہ وزارت مذہبی امور ہر سال قومی سیرت کانفرنس کا انعقاد کرتی ہے جو 12 ربیع الاول کے دن منعقد ہوتی ہے، اس مرتبہ حکومت نے بین الاقوامی معیار کی سیرت کانفرنس کا اہتمام کیا ہے جس میں عالم اسلام کے سکالرز اور علماء کرام پر مبنی وفود شرکت کرینگے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ کانفرنس 11 اور 12 ربیع الاول بمطابق 20 اور 21 نومبر کو ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ آپؐ کی سیرت طیبہ سے انسانیت کو ہر قسم کی بداخلاقیوں سے اجتناب کا پیغام ملتا ہے، آپؐ کی شان کا حق ادا نہیں ہو سکتا تاہم وزارت اور حکومت کی سطح پر کانفرنس کا انعقاد شایان شان طریقہ سے ہو گا۔ پہلے دن سیرت کانفرنس کی افتتاحی تقریب میں وزیراعظم عمران خان مہمان خصوصی ہوں گے۔

20 نومبر کو دوسری نشست میں مقالات پیش ہوں گے اور تقاریر میں سیرت طیبہ پر مقررین اظہار خیال کریں گے۔ 21 نومبر کو سیرت کانفرنس کی اختتامی نشست میں صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی مہمان خصوصی ہوں گے۔ اسی نشست میں قومی اور علاقائی زبانوں میں کتب سیرت، نعت اور مقالات سیرتؐ پر مقابلوں میں اول، دوئم اور سوئم آنے والوں کو انعامات دیئے جائیں گے۔

رحمتہ اللعالمین ؐکانفرنس میں ملک بھر سے تمام مکتبہ فکر کے علماء کرام، سفارتکاروں، سول سوسائٹی اور سیاسی اکابرین کو مدعو کیا جائیگا۔ انہوں نے کہا کہ حضور نبی پاکؐ کے پیغامات ساری دنیا تک پہنچانے میں ذرائع ابلاغ ہمارے مدد کرے،اس حوالے سے مذہبی سفارتکاری سمیت تمام راستے اختیار کئے جائینگے۔ انہوں نے کہا کہ رواں سال کانفرنس کا موضوع ’ختم نبوت اور مسلمانوں کی ذمہ داریاں تعلیمات نبوی کی روشن میں‘ رکھا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ختم نبوتؐ پر تمام عالم اسلام کا اجماع ہے، اس کو نہ ماننے والا دائرہ اسلام سے خارج ہے، آپؐ کا پیغام رحمت تمام مذاہب، تمام ادیان اور ساری مخلوقات کیلئے ہے۔ 19 نومبر کو ریڈیو پاکستان کے زیر اہتمام نعتیہ مقابلہ ہو گا۔ کراچی کی میمن مسجد میں عالمی مقابلہ حسن قرأت ہو گا۔ 18 نومبر کی شام گورنر ہائوس لاہور میں محفل سماع ہو گی۔

ایک سوال کے جواب میں وزیر مذہبی امور نے کہا کہ رواں سال دسمبر کے آخر میں عالمی بین المذاہب کانفرنس کا انعقاد کیا جائے گا جس میں جامعہ الازہر، امام کعبہ، پوپ یا ان کا کوئی خاص نمائندہ شرکت کریگا، یہ کانفرنس لاہور میں ہو گی جس کی صدارت وزیراعظم کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ کافنرنس میں مراکش، شام، عراق، ایران، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات سے مندوبین شرکت کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ مختلف شہروں میں پورے سال کے دوران سیرت ؐ کے پروگرام جاری رکھیں گے۔انہوں نے کہا کہ یورپ اور امریکہ میں ایک طبقہ اہانت مقدسات اور حضور اکرمؐ کی گستاخیاں کر رہا ہے، ہماری کوششوں کی وہ لوگ مذمت کرتے ہیں، ہم اس بارے یورپ کے معتدل طبقات کی حمایت حاصل کرکے تصادم سے بچنے کی کوشش کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایک گناہگار مسلمان بھی حضور اکرمؐ پر جان بھی قربان کرنے کیلئے تیار ہے، انہوں نے کہا کہ ختم نبوتؐ کے حوالہ سے ایک طبقہ خواہ مخواہ اختلاف اور انتشار کی کیفیت پیدا کرتا ہے، ان سے نمٹنے کیلئے تمام اقدامات اٹھائے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ جب آپؐ کی شان میں کوئی گستاخی کرتا ہے تو تصادم کی کیفیت پیدا ہو جاتی ہے جس سے بچنے کیلئے تمام اکائیوں کو ساتھ ملا کر رواداری اور مساوات پر مبنی اقدامات اٹھائینگے۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments