امریکی ناظم الامور پال جونز کی دفتر خارجہ طلبی، امریکی صدر ٹرمپ کی جانب سے پاکستان کے بارے میں بیان پر شدید احتجاج ریکارڈ کرایا گیا

منگل نومبر 17:27

امریکی ناظم الامور پال جونز کی دفتر خارجہ طلبی، امریکی صدر ٹرمپ کی ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 نومبر2018ء) سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے امریکی ناظم الامور پال جونز کو دفتر خارجہ کیا اور امریکی صدر ٹرمپ کی جانب سے پاکستان کے بارے میں حالیہ بیان پر شدید احتجاج اور مایوسی کا اظہار کیا۔ امریکی ناظم الا مور سے کہا گیا ہے کہ پاکستان کے خلاف اس قسم کے بے بنیاد اور ناپسندیدہ بیانات ہر گز قبول نہیں کریں گے۔

دفتر خارجہ کے ترجمان کے مطابق سیکرٹری خارجہ نے منگل کو امریکی ناظم الامور کو دفتر خارجہ طلب کیا اور پاکستان کے بارے میں امریکی صدر ٹرمپ کے حالیہ بیان پر شدید احتجاج اور سخت مایوسی کا اظہار کیا اور انہیں کہا گیا کہ پاکستان کے خلاف اس قسم کے بے بنیاد اور ناپسندیدہ بیانات ہر گز قبول نہیں کریں گے۔ اسامہ بن لادن کے حوالے سے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے سیکرٹری خارجہ نے امریکہ کو یاددہانی کرائی کہ پاکستانی انٹیلی جنٹس تعاون سے ہی اسامہ بن لادن کے خفیہ ٹھکانے کا پتہ چلایا گیا۔

(جاری ہے)

سیکرٹری خارجہ نے امریکہ کو بتایا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کسی ملک نے اتنی بھاری قیمت ادا نہیں کی جتنی پاکستان نے ادا کی ہے۔ امریکی قیادت نے کئی مواقع پر اس بات کو تسلیم بھی کیا کہ پاکستان کے تعاون سے القائدہ قیادت تک پہنچنے اور خطے سے دہشت گردی کے خطرات کو ختم کرنے میں مدد گار ثابت ہوئی ہے۔ تہمینہ جنجوعہ نے کہا کہ امریکہ کو یہ نہیں بھولنا چاہئے کہ القائدہ کے صف اول کے رہنما پاکستان کے فعال تعاون سے یا تو قتل یا گرفتار کئے گئے۔

انہوں نے کہا کہ افغانستان میں زمینی، فضائی اور بحری رابطوں کی غرض سے بین الاقوامی کوششوں میں پاکستان کا مسلسل تعاون مشن کی کامیابی کیلئے انتہائی ناگزیر ہے۔ سیکرٹری خارجہ نے کہا کہ پاکستان اور امریکہ افغانستان کے تنازعہ کے حل کیلئے خطے کے دیگر سٹیک ہولڈرز کے ساتھ قریبی تعاون کر رہے ہیں۔ سیکرٹری خارجہ نے کہا کہ اس نازک موڑ پر تاریخ کے بند باب کے بارے میں بے بنیاد الزامات اس اہم تعاون کو بری طرح متاثر کر سکتا ہے۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments