خیبرپختونخواہ میں پولیو بےقابو ہوگیا، مزید3 کیسز سامنے آگئے

بنوں، وزیرستان اور ہنگو میں تین مریضوں میں پولیو وائرس کی تصدیق، خیبرپختونخواہ میں پولیو کیسز کی تعداد 44 ہوگئی، جبکہ ملک بھر میں پولیو مریضوں کی تعداد 58 ہوگئی۔ انسداد پولیو پروگرام

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ اتوار اگست 18:56

خیبرپختونخواہ میں پولیو بےقابو ہوگیا، مزید3 کیسز سامنے آگئے
اسلام آباد (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔25 اگست 2019ء) خیبرپختونخواہ میں پولیو کے مزید تین کیسز سامنے آگئے ہیں، بنوں، وزیرستان اور ہنگو میں تین مریضوں میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوگئی ہے، جس کے بعد ملک بھر میں پولیو مریضوں تعداد 58 ہوگئی ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق خیبرپختونخواہ میں حکومت اور محکمہ صحت کی غفلت کا نتیجہ ہے کہ پولیو وائرس نے سراٹھا لیا ہے، پولیو وائرس پھیلنے سے کے پی میں پولیو کے مزید تین کیسز سامنے آگئے ہیں۔

بنوں ، وزیرستان اور ہنگو میں تین مریضوں میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔بتایا گیا ہے کہ تین نئے کیسز کے ساتھ خیبرپختونخواہ میں پولیو کیسز کی تعداد 44 ہوگئی ہے۔جس کے بعد ملک بھر میں پولیو مریضوں کی تعداد 58 ہوگئی ہے۔ انسداد پولیوپروگرم کا کہنا ہے کہ خیبرپختونخواہ کے 26 اضلاع میں کل سے پولیو مہم اور ویکسینیشن شروع ہوگی۔

(جاری ہے)

انسداد پولیو پروگرام نے لوگوں کو آگاہی مہم میں بتایا کہ والدین اپنے بچوں کو پولیو سے بچاؤکے قطرے ضرور پلائیں۔

کل بروز پیر 26 اگست 2019 سے تین روزہ خصوصی انسداد پولیو مہم کا آغاز کیا جارہا ہے جس کے دوران پانچ سال کی عمر تک تقریباً چھیاسی (86) لاکھ بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جائیں گے۔ خیبر پختونخوا کے 27 مخصوص اضلاع میں پانچ سال سے کم عمر کے چھیالیس (46) لاکھ سے زائد بچوں کو پولیو کے قطرے پلائے جانے کا حدف مقرر کیا گیا ہے۔ انسداد پولیو کے حکام کے مطابق ملک کے 46 مخصوص اضلاع میں سب سے زیادہ خیبر پختونخوا کے اضلاع کی تعداد 27 ہے جہاں اب تک تین قبائلی اضلاع باجوڑ، خیبر اور شمالی وزیرستان سمیت پورے صوبہ کے دیگر اضلاع بنوں، لکی مروت، ڈیرہ اسماعیل خان، تورغر، ہنگو، چارسدہ اور شانگلہ میں اب تک پولیو سے متاثرہ بچوں کی تعداد 41 تک پہنچ گئی ہے۔

حکام کے مطابق انسداد پولیو کے تین روزہ خصوصی مہم کے دوران صوبہ پنجاب کے چار اضلاع لاہور، سرگودھا، میانوالی اور جہلم، صوبہ سندھ کے پانچ اضلاع جیکب آباد، کشمور، دادو، جامشورو اور حیدرآباد جبکہ صوبہ بلوچستان کے سات اضلاع کوئٹہ، جعفر آباد، پشین، جھل مگسی، صحبت پور، نصیر آباد اور قلعہ عبداللہ جبکہ گلگت بلتستان میں ضلع دیامیر میں پولیو کے خلاف مہم چلائی جائے گی۔

خیبر پختونخوا کے 27 اضلاع پشاور، کوہاٹ، کرک، ہنگو، بنوں، لکی مروت، ٹانک، ڈیرہ اسماعیل خان، نوشہرہ، چارسدہ، مردان، صوابی، ہری پور، بٹگرام، تورغر، کوہستان، سوات، بونیر، شانگلہ، مانسہرہ، باجوڑ، مہمند، خیبر، اورکزئی، کرم، شمالی وزیرستان اور جنوبی وزیرستان میں 46 لاکھ سے زائد پانچ سال کی عمر کے بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جائیں گے۔ حکام کے مطابق اس مقصد کے لئے صوبہ میں 16ہزار800 ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جن میں 13884 موبائل ٹیمیں،1222 فکسڈ، 792 ٹرانزٹ اور 902 رومنگ ٹیمیں شامل ہیں۔ یاد رہے کہ اب تک ملک بھر میں پولیو سے متاثرہ بچوں کی تعداد 53 تک پہنچ گئی ہے جو باعث تشویش ہے۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments