پاکستان میں موبائل کے ذریعے رقوم کی ادائیگی کا نظام تیار کر لیا گیا

اب کسی قسم کی خریداری پر ادائیگی نقد، چیک یا ڈیبٹ کارڈ کے ذریعے نہیں بلکہ براہ راست موبائل فون اپلیکیشن کے ذریعے ہوگی

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین جمعرات ستمبر 11:01

پاکستان میں موبائل کے ذریعے رقوم کی ادائیگی کا نظام تیار کر لیا گیا
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 12 ستمبر 2019ء) : پاکستان میں ادائیگیوں کا طریقہ کار تبدیل کرنے کے لیے مکمل طور پر ایک نظام تیار کر لیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق حکومت نے ادائیگیوں کا طریقہ کار تبدیل کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ جس کے تحت موبائل پیمنٹ سسٹم تیار کرلیا گیا ہے ۔ اب کسی قسم کی خریداری پر ادائیگی نقد، چیک یا ڈیبٹ کارڈ کے ذریعے نہیں بلکہ براہ راست موبائل فون اپلیکیشن کے ذریعے ہوگی۔

موبائل پیمنٹ کے سسٹم کو وزارت سائنس و ٹیکنالوجی نے تیارکیا ۔اس حوالے سے وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے بتایا کہ پاکستان کی 90 فیصد اکانومی کیش پیمنٹ پر محیط ہے۔ جب ہر کوئی موبائل پیمنٹ کرے گا تو معیشت خود بخود ڈاکومنٹ ہوجائے گی۔ اگر چین میں جا کر دیکھا جائے تو وہاں پر کیش تقریباً ختم ہو چکا ہے اور تمام ادائیگیاں موبائل کے ذریعے ہی ہوتی ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ موبائل پیمنٹ کے ذریعے ادائیگیوں کا مکمل نظام تیار ہے۔ ایک آدمی ایک ماہ کے دوران کیا اور کتنا خرچ کر رہا ہے وہ سارا حساب بھی حکومت کے پاس آجائے گا۔ اب صرف ایک سوال ہے کہ اگر ہم اس کے پیچھے والے سسٹم کو خود بناتے ہیں تو اُس میں تھوڑا وقت درکار ہو گا لیکن اگر ہم وہ بیک اینڈ سسٹم کے حوالے سے چین سے بات چیت کر لیں گے تو وہ فوراً شروع ہو جائے گا۔

اس حوالے سے بات کرتے ہوئے ایگنائٹ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر یوسف نسیم نے بتایا کہ ڈیجیٹل فنانسنگ انکلوژن میں اگر پاکستان صحیح طرح کام کرے تو ہم 2025ء تک اپنی جی ڈی پی میں 36 ارب ڈالر کا اضافہ کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موبائل فون کے ذریعے ادائیگیوں کے اس نظام سے مزید 4 ملین نوکریاں پیدا ہوسکتی ہیں۔ جبکہ اس نظام کے ذریعے حکومتی آمدن میں 7 ارب ڈالر کا اضافہ کیا جاسکتا ہے۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments