اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر اور اسپیکر افغان ویلوسی جرگہ کے مابین رابطہ

اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر اور اسپیکر افعان ویلوسی جرگہ میر رحمان رحمانی کے مابین ویڈیو لنک پر گفتگو ، ٹیلیفو نک رابطے کے دوران دوطرفہ تعلقات اور علاقائی صورتحال اور باہمی دلچسپی کے دیگر امور پر تبادلہ خیال،دونوں رہنماؤں نے ایک دوسرے کو عید کی مبارکباد بھی دی

جمعرات اگست 22:26

اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر اور اسپیکر افغان ویلوسی جرگہ کے مابین رابطہ
ًاسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 06 اگست2020ء) اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر اور اسپیکر افغان ویلوسی جرگہ کے مابین رابطہ،اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر اور اسپیکر افعان ویلوسی جرگہ میر رحمان رحمانی کے مابین ویڈیو لنک پر گفتگو ، ٹیلیفو نک رابطے کے دوران دوطرفہ تعلقات اور علاقائی صورتحال اور باہمی دلچسپی کے دیگر امور پر تبادلہ خیال،دونوں رہنماؤں نے ایک دوسرے کو عید کی مبارکباد بھی دی۔

سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا کہ پاکستان افعانستان کے ساتھ تعلقات کو انتہائی اہمیت دیتا ہے امن، ترقی اور خوشحالی دونوں ہمسایہ ممالک کا مشترکہ ایجنڈا ہے پاکستان خطے اور علاقائی سطح پر امن کا خواہاں ہے خطے میں ترقی اور خوشحالی کے لئے کوشاں ہیں اور خطے کی ترقی اور خوشحالی چاہتا ہے۔

(جاری ہے)

اسپیکر قومی اسمبلی دونوں اسپیکروں کا علاقائی ترقی و خوشحالی کے لئے کوششیں مزید تیز کرنے پر اتفاق۔

دونوں پارلیمانوں میں پاک آفغانستان تعلقات اور دیگر شعبوں میں تعاون میں فروغ کے لیے خصوصی کمیٹیاں قائم کرنے پر اتفاق۔ کیاگیااسپیکر قومی اسمبلی کی افعان اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کو پارلیمانی وفد کے ہمراہ پاکستان کے دورہ کی دعوت بھی دی اسد قیصر نے مزید کہا کہ پارلیمانی فرینڈشپ گروپس دونوں ممالک کو مزید قریب لانے میں اہم کردار ادا کر سکتے ہیںدونوں ہمسایہ ممالک میں زراعت اور تجارتی شعبوں میں تعاون کے وسیع مواقع موجود ہیں جنہیں دونوں ممالک کی عوام کی فلاح کے لیے بروئیکار لایا جا سکتا ہے۔

اس موقع پر اسپیکر افغان ویلوسی جرگہ نے کہا کہ افعان پاک تجارت میں حائل رکاوٹوں کو ختم کرانے کے لیے اسپیکر اسد قیصر کی گہری دلچسپی قابل ستائش ہے برادر ملک پاکستان کے دورہ کی دعوت باعث اعزاز ہے اور جلد وفد کے ہمراہ دورہ کروں گا افغانستان میں امن کے قیام اور سماجی ترقی کے لیے پاکستان کی کاوشوں کو سراہتے ہیں۔ عوامی اور تجارتی سطح پر رابطوں کو فروغ دے کر دوطرفہ تعلقات کو مزید مستحکم بنایا جاسکتا ہے۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments