’وزیراعظم کی ایک ہی دن میں 4 ممالک کے سربراہان سے ملاقات، اپوزیشن کا پروپیگنڈا بے نقاب‘

وزیراعظم عمران خان کی ایک ہی دن میں 4ممالک کے سربراہان سے ملاقات نے اپوزیشن کے پاکستان کے تنہا رہ جانے کے پروپگینڈا کو بری طرح بے نقاب کر دیا، پاکستان تحریک انصاف

Danish Ahmad Ansari دانش احمد انصاری جمعرات 16 ستمبر 2021 23:10

’وزیراعظم کی ایک ہی دن میں 4 ممالک کے سربراہان سے ملاقات، اپوزیشن کا ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ، اخبار تازہ ترین، 16ستمبر 2021) وزیراعظم عمران خان کی ایک ہی دن میں 4ممالک کے سربراہان سے ملاقات نے اپوزیشن کے پاکستان کے تنہا رہ جانے کے پروپگینڈا کو بری طرح بے نقاب کر دیا، اپوزیشن کی جانب سے پاکستان کو عالمی سطح پر تنہا قرار دینے پر تحریک انصاف کا ردعمل۔ تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف کی جانب سے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ایک ٹویٹ میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کی ایک ہی دن میں 4ممالک کے سربراہان سے ملاقات نے اپوزیشن کے پاکستان کے تنہا رہ جانے کے پروپگینڈا کو بری طرح بے نقاب کر دیا۔

واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان کے دورِ حکومت کی جانب سے متعدد سیاسی رہنماؤں کی جانب یہ کہا گیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کی نئی خارجہ پالیسی کی وجہ سے پاکستان عالمی سطح پر تنہا ہو گیا ہے۔

(جاری ہے)

گزشتہ دنوں محمود خان اچکزئی نے کہا تھا کہ وزیراعظم عمران خان کی پالیسی کی وجہ سے پاکستان عالمی سطح پر تنہا ہو گیا ہے۔

خیال رہے کہ وزیرِاعظم عمران خان آج دوروزہ دورے پر تاجکستان کے دارالحکومت دوشنبے پہنچے۔ دوشنبے میں وزیراعظم عمران خان نے پاکستان اور تاجکستان کے مابین کاروباری شعبے میں تعاون کو فروغ دینے کے لیے مشترکہ بزنس فورم سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان سے مختلف شعبوں کی 67 کمپنیاں تاجکستان آئی ہیں، کانفرنس کا مقصد دونوں ممالک کے درمیان کاروباری روابط بڑھانا ہے۔

پاکستان میں بجلی بہت مہنگی ہے اور امید کرتے ہیں کہ پن بجلی سے متعلق تاجکستان کی تکنیکی صلاحیت سے فائدہ اٹھائیں سکیں گے۔ تاجکستان میں سستی، صاف ستھری ہائیڈرالک بجلی سستی ہے لیکن پاکستان میں بدقسمتی سے بجلی بہت مہنگی ہے۔ انہوں نے کہا کہ امید کرتے ہیں کہ کاسا 1000 توانائی منصوبے سے ہمیں بھی تاجکستان کی بجلی سے فائدہ پہنچے گا، پاکستان تاجکستان بزنس فورم میں تجارت کوفروغ دینے سے متعلق بات ہوگی، دو طرفہ تجارت سے دونوں ممالک کو فائدہ ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے مابین جتنی تجارتی سرگرمیاں ہوں گی دونوں ممالک کو اتنا ہی فائدہ ہوگا۔ وزیر اعظم عمران خان نے زور دیا کہ پاکستان کی تاجر برادری تاجک کاروباری طبقے کو مدعو کرے گی اور ہم یقین دلاتے ہیں کہ پاکستان میں ان کی آمد سے صنعتی سرگرمیاں بڑھیں گی اور اس ضمن میں انہیں ہر ممکن تعاون فراہم کیا جائے گا۔ وزیراعظم عمران خان نے امید ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان میں کئی سال کے تنازع کے بعد امن قائم ہوگا، پاک تاجک تجارت کے لیے افغانستان میں امن قیام ضروری ہے، تاکہ نقل و حمل بہتر ہوسکے، تاجک صدر اور میں مل جل کر افغان امن کےلیے ہر ممکن کوشش کریں گے ، خصوصا دو بڑی برادریوں پشتون اور تاجک کو قریب لانے اور مخلوط حکومت کے قیام کو یقینی بنانے کےلیے پوری کوشش کریں گے۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments