کورونا ویکسین حاملہ خواتین بھی لگواسکتی ہیں، ڈاکٹر فیصل سلطان

اسلام آباد میں 100 فیصد ویکسین کیلئے موبائل ویکسینیشن ہوگی، ڈینگی کے پنپنے کا موسم ہے اس لیے پانی کھڑا ہونے نہ دیں،معاون خصوصی صحت کی میڈیا سے گفتگو

پیر 20 ستمبر 2021 23:49

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 20 ستمبر2021ء) وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے کہا ہے کہ اسلام آباد میں 100 فیصد ویکسین کے لیے موبائل ویکسینیشن شروع کی جا رہی ہے، کورونا ویکسین حاملہ خواتین بھی لگواسکتی ہیں، ڈینگی کے پنپنے کا موسم ہے اس لیے پانی کھڑا ہونے نہ دیں۔ اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر سلطان نے کہا کہ منصوبہ ہے کہ اسلام آباد سو فیصد ویکسینیٹڈ ہو، یعنی یہاں کا ہر شہری، ہر مکین کو کووڈ سے بچاؤ کا انجیکشن لگا ہو۔

انہوں نے کہا کہ اس کو ممکن بنانے کے لیے ہمیں موبائل ٹیموں کے زیادہ استعمال کی ضرورت ہوگی، اس کی وجہ یہ ہے کہ کسی بھی شہر میں کچھ آبادی ایسی ہوتی ہے، جو باہر نہیں نکلتی یا نہیں نکلنا چاہتی یا ان تک پہنچنا اتنا آسان نہیں ہوتا، اکثر غریب لوگ ہوتے ہیں یا ان کے وسائل ایسے نہیں ہوتے کہ دن میں کسی بھی وقت چھٹی کرکے یا اپنے کام سے فارغ ہو کر آسکیں۔

(جاری ہے)

ان کا کہنا تھا کہ ایسی صورت حال میں بجائے اس کے کہ ہم انتظار کریں کہ وہ ویکسینیشن سینٹر تک آئیں، ویکسینیشن سینٹر ان تک پہنچایا جائے تو اس کے لیے یہ موبائل ویکسینیشن کا تصور ہے۔ڈاکٹر فیصل سلطان نے کہا کہ اس کے ذریعے ہم کوشش کر رہے ہیں کہ ہماری ٹیموں میں ڈاکٹر اور خاتون سمیت عملہ شامل ہوتا ہے تاکہ ہر طرح کے سوالوں کے جواب ان کی ضروریات کے مطابق دئیے جاسکیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ پوری ٹیم 4 لوگوں کی ہوتی ہے اور یہ یقینی بناتی ہے کہ باقاعدہ ویکسینیشن ہوسکے، جب اسلام آباد سو فیصد ویکسینیٹڈ ہوجائے گا تو بیماری پھیلنے میں مشکل ہوجاتی ہے، تو ہم یہ کہنے کے قابل ہوجائیں گے کہ ماسک اور دیگر پابندیاں ہیں، ان سے مکمل جان چھڑا سکیں۔ان کا کہنا تھا کہ میڈیا کے ذریعے شہریوں سے میری درخواست ہوگی کہ جب یہ ٹیمیں آپ کے پاس آئیں تو ضرور ویکسین لگوائیں، یہ مؤثر ویکسین ہے، حکومت نے خرید کر دی ہے یا مہیا کی ہے، یہ افادیت رکھتی ہے اور آپ کو بیماری سے بچائے گی، بیمارے کے بہت برے اثرات سے بچنے کے لیے یہ ویکسین اچھی چیز ہے۔

معاون خصوصی نے کہا کہ اگر ایک خوراک لگوا لی ہے تو دوسری خوراک لینے میں زیادہ دیر نہ لگائیں، 4 ہفتے گزر گئے ہوں تو جا کر دوسری خوراک لگوائیے۔انہوں نے کہا کہ خصوصاً یہ پیغام دوں گا کہ جو خواتین حاملہ ہیں یا بچوں کو دودھ پلا رہی ہیں وہ بھی یہ ویکسین لگوا سکتی ہیں، اس لیے آپ، آپ کے گھر والوں اور دیگر کو کووڈ سے بچاؤ کی خاطر کسی صورت یہ موقع نہ چھوڑیں۔

ڈینگی کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ آج کل موسم ایسا ہے کہ بارش کی وجہ سے پانی کھڑا ہوتا ہے تو پانی کھڑا نہ ہونے دیں کیونکہ ڈینگی کا جو مچھر ہوتا ہے وہ پانی میں پلتا ہے تو ایسا موقع نہ دیں کہ جس سے ڈینگی پھیلے۔ دریں اثناء کورونا وائرس کی چوتھی لہر کے دوران این سی او سی کی جانب سے حاملہ اور دودھ پلانے والی خواتین کو بھی کرونا ویکسین لگوانے کی ہدایات جاری کر دی گئیں۔

نیشنل کمانڈ اینڈ ا?پریشنز سنٹر (این سی او سی) کے مطابق حاملہ، دودھ پلانے خواتین کیلئے کورونا ویکسین محفوظ اور موثر ہی. ویکسین حمل کے کسی بھی مرحلے میں لگائی جا سکتی ہے، کورونا ویکسین مرد یا عورت میں اولاد پیدا کرنے کی صلاحیت پر اثر نہیں کرتی، حمل کے دوران کورونا ماں اور بچے کیلئے انتہائی خطرناک ہو سکتا ہے۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments