حکومت کی مدت پوری کرنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا‘بھرپوراحتجاجی مہم شروع کررہے ہیں.مولانا فضل الرحمان

پیپلز پارٹی کو منانے کا کوئی ارادہ نہیں اور ان کی واپسی کا کوئی چانس نہیں ہے‘رابط کیا گیا تو باوقاراندازمیں جواب دیں گے.سربراہ پی ڈی ایم کی صحافیوں سے گفتگو

Mian Nadeem میاں محمد ندیم پیر 18 اکتوبر 2021 11:09

حکومت کی مدت پوری کرنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا‘بھرپوراحتجاجی مہم شروع کررہے ہیں.مولانا فضل الرحمان
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-ا نٹرنیشنل پریس ایجنسی۔18 اکتوبر ۔2021 ) پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ(پی ڈی ایم) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ موجودہ حالات میں حکومت کی جانب سے مدت پوری کرنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا اور اگر وزیراعظم عمران خان سویلین بالادستی کی بات کرتے ہیں تو میں ان کی دعوت قبول نہیں کروں گا. اسلام آباد میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ اس مہنگائی کا مقابلہ کرنے کے لیے عام آدمی کو میدان میں آنا ہو گا اور پی ڈی ایم ہر محاذ پر ان کے شانہ بشانہ اس محاذ پر لڑنے کے لیے تیار ہے اور اس کے لیے ہم اپنی تنظیموں کو باقاعدہ ہدایات دے رہے ہیں.

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ہم پوری قوم سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ ان مظاہروں، ریلیوں اور مارچ میں بھرپور شرکت کرے، خود اعتمادئی کے ساتھ میدان میں آئیںانہوں نے کہاکہ پاکستان کے کل قرض کا حجم اس حکومت کے آنے سے پہلے 25ہزار ارب تھا اور اس وقت 45 ہزار ارب ہو گیا ہے، یہ قوم کس طرح سے ادا کرے گی اور قوم کے بچے کس طرح سے اس کے متحمل ہوں گے. جمعیت علمائے اسلام(ف) کے سربراہ نے کہا کہ تین سال قبل ملک کی سالانہ معاشی ترقی کا تخمینہ 5.8فیصد تھا اور اب ہم منفی میں جا رہے ہیں تو ایسے جعلی، نااہل، کرپٹ اور نالائق حکمرانوں کو قوم پر مزید مسلط ہونے کا کوئی حق نہیں ہے.

انہوں نے کہا کہ عوام اس وقت پیٹرولیم مصنوعات کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے بوجھ تلے دب گئے ہیں، حکومت نے چار ماہ میں آٹھویں بار پیٹرولیم مصنوعات مہنگی کی ہیں اور 15 جون کے بعد پیٹرولیم مصنوعات 30.70روپے فی لیٹر مہنگی کردی گئی ہیں. انہوں نے کہا کہ حکومت ملک اور قوم کے مفادات کے بجائے آئی ایم ایف کے مفادات کی چوکیداری کررہی ہے، ہمیں غلام بن کر عالمی اداروں سے بات نہیں کرنی چاہیے بلکہ ایک آزاد قوم کی حیثیت سے عالمی اداروں سے بات کرنی چاہیے لیکن 25 کروڑ کی آبادی کے اس ملک کی قیادت غلامانہ ذہنیت کی ہے تو عوام کے مفادات کے تحفظ کے لیے ہم نے میدان میں نکلنے کا فیصلہ کیا ہے.

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ حکومت نے ملک کو آئی ایم ایف کے لیے چراگاہ بنا دیا ہے پی ڈی ایم پہلے بھی کہہ چکی ہے کہ سلیکٹڈ اور نااہل حکومت پوری طرح ناکام ہو چکی ہے یہ ایک کرپٹ ترین حکومت ہے اور عوام ضرور سوال کریں گے کہ یہ آخر قصور کس کا ہے. انہوں نے کہا کہ اس صورتحال میں ضرورت اس بات کی پڑی کہ پی ڈی ایم ایک موثر اقدام کرے چنانچہ ہم فوری طور پر اگلے دو ہفتوں کے لیے پورے ملک میں مظاہروں کا اعلان کررہے ہیں اور 12 ربیع الاول کے بعد ملک بھر میں ہر ضلعی ہیڈ کوارٹر مظاہرے کیے جائیں گے.

انہوں نے کہا کہ جوں ہی ملک میں پہلا مرحلہ مکمل ہو گا تو پھر پی ڈی ایم ملک بھر میں اگلے مرحلے کا اعلان کرے گی اور اس طریقے سے ملک بھر میں مہنگائی کے خلاف بھرپور تحریک شروع کی جائے گی. جمعیت علمائے اسلام(ف) کے سربراہ نے کہا کہ 18 اکتوبر کو مسلم لیگ ہاﺅس اسلام آباد میں پی ڈی ایم کا سربراہی اجلاس ہو گا جس میں مہنگائی کے خلاف احتجاج ایجنڈے پر مختلف امور پر بھی گفتگو کی جائے گی ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کو منانے کا کوئی ارادہ نہیں اور ان کی واپسی کا کوئی چانس نہیں ہے البتہ اگر ان کی طرف سے کوئی رابطہ کیا گیا تو ہماری طرف سے بھی باوقار انداز میں جواب دیا جائے گا.

انہوں نے کہا کہ عمران خان وزیر اعظم نہیں ہیں اور موجودہ حالات میں حکومت کی جانب سے مدت پوری کرنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا، اگر وہ سویلین بالادستی کی بات کرتے ہیں تو میں ان کی دعوت قبول نہیں کروں گا.

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments