مہنگائی میں کمی کیلئے بنیادی اشیاء کی قیمتوں پر ٹیکس کم کرنےکا فیصلہ

وفاقی وزراء اپنے حلقوں میں مہنگائی اور منافع خوری پر نظررکھیں، مصنوعی مہنگائی کرنے والوں کیخلاف سخت کاروائی کی جائے گی۔ وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت اجلاس

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ پیر 18 اکتوبر 2021 18:31

مہنگائی میں کمی کیلئے بنیادی اشیاء کی قیمتوں پر ٹیکس کم کرنےکا فیصلہ
اسلام آباد (اُردوپوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 18اکتوبر 2021ء) وفاقی حکومت نے مہنگائی کیخلاف بنیادی اشیاء کی قیمتوں پر ٹیکس کم کرنے کا فیصلہ کرلیا، وزیراعظم نے ہدایت کی کہ وفاقی وزراء اپنے حلقوں میں مہنگائی اور منافع خوری پر نظر رکھیں، مصنوعی مہنگائی کرنے والوں کیخلاف سخت کاروائی کی جائے گی۔وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت بڑھتی ہوئی مہنگائی کے اثرات کا جائزہ لینے اور عوام کو مہنگائی میں ریلیف دینے سے متعلق اجلاس ہوا، اجلاس میں پٹرولیم مصنوعات، بجلی اور گیس کی قیمتوں میں اضافے کے مہنگائی پر مرتب اثرات کا بھی جائزہ لیا گیا، اجلاس میں اشیائے خوردونوش کی قیمتوں پر ٹیکس کم کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

وزیراعظم نے ہدایت کی کہ وفاقی وزراء اپنے حلقوں میں مہنگائی اور منافع خوری پر نظررکھیں، وفاقی وزراء کو پرائس کنٹرول کمیٹیوں کے فیصلوں پر عملدرآمد کروائیں۔

(جاری ہے)

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مصنوعی مہنگائی کرنے والوں کیخلاف سخت کاروائی کی جائے گی۔دوسری جانب وفاقی وزیر منصوبہ بندی، ترقی و اصلاحات اسد عمر نے کہا  کہ آئندہ چند ماہ میں مہنگائی میں کمی کا امکان نہیں ، مہنگائی میں حالیہ اضافہ پاکستان کا نہیں عالمی مسئلہ ہے۔

انہوں نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پوری دنیا میں مہنگائی کا ذکر ہو رہا ہے، دنیا بھر میں اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں چار سوالات سامنے رکھوں گا، مہنگائی کیوں ہوئی ، پچھلے سال غیر معمولی آفت کا سامنا کیا ، دنیا ایک دم سے بند ہوئی ، اشیا کی فراہمی زیادہ تھی، استعمال کرنے والے کم ہو گئے، ہم نے ایسی حکمت عملی اختیار کی جسے دنیا بھر میں سراہا گیا۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے سمارٹ لاک ڈائون کی پالیسی اپنائی، ہم نے توانائی، ایکسپورٹ انڈسٹری ، ادویات بنانے والی کمپنیاں اور دیگر سیکٹرز کھول دیئے تھے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ دنیا میں کڑی پابندیاں لگیں، یورپی یونین، بھارت، چین اور دیگر ممالک متاثر ہوئے، نظام درہم برہم ہو گیا، جب دنیا معمول پر آئی تو اشیا خوردونوش کی طلب بڑھی اور قلت ہو گئی۔ 12ماہ پہلے ستمبر 2020سے لیکر ستمبر 2021کی نسبت دنیا میں مختلف اشیا کی قیمتوں پر جو اثر پڑا اس کی لسٹ آئی، دنیا میں کروڈ آئل میں 81.55 فیصد اضافہ ہوا جبکہ پاکستان میں 55.17 فیصد اضافہ ہوا، بین الاقوامی دنیا میں گیس کی قیمت میں 135 فیصد اضافہ ہوا جبکہ پاکستان کی ڈومیسٹک گیس کی قیمت میں اضافہ نہیں ہوا۔

اسلام آباد شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments